.

’باب المندب‘ کی سلامتی کے لیے ہرمُمکن قدم اٹھائیں گے:عرب اتحاد

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن میں دستوری حکومت کی بحالی کے لیے سرگرم عرب اتحاد نے کہا ہے کہ یمن کی بین الاقوامی بندرگاہ باب المندب کے تحفظ کے لیے ہرممکن اقدامات کیے ہیں اور آئندہ بھی باب المندب کی سلامتی کو درپیش خطرات کے تدارک کے لیے ہرممکن اقدام سے گریز نہیں کریں گے۔

’العربیہ‘ کے مطابق عرب اتحادی فوج کرنل ترکی المالکی نے ایک پریس بریفنگ میں کہا کہ باب المندب سے بین الاقوامی مال بردار بحری جہازوں کی بہ حفاظت آمد ورفت کو یقینی بنانے کے لیے کسی بھی اقدام سے گریز نہیں کریں گے۔ حوثیوں کی طرف سے باب المندب کی سلامتی کو لاحق خطرات کا تدارک کیا جائے گا۔

یمن کے شہر مآرب میں صحافیوں سے بات کرتے ہوئے کرنل المالکی نے زور دے کر کہا کہ حوثی شدت پسند، داعش اور القاعدہ دہشت گردانہ نظریات کے فروغ میں ایک دوسرے کے معاون ومدد گار ہیں، جب کہ عرب فوجی اتحاد تمام دہشت گرد تنظیموں کے ساتھ مساوی انداز میں نمٹنے کی پالیسی پر عمل پیرا ہے۔

خیال رہے کہ یمن میں سرکاری فوج، مزاحمتی ملیشیا اور عرب اتحادی فوج نے حجۃ گورنری میں 50 مربع کلو میٹرکا علاقہ حوثی باغیوں سے واپس لے لیا ہے۔

عسکری ذرائع کا کہنا ہے کہ یمنی فوج حضہ کے اہم تزویراتی علاقے مثلث عاھم سے صرف پانچ کلو میٹر دور ہے۔