.

"جمال خاشقجی کے قتل کی سعودی تحقیقات کی شفافیت پر یقین ہے"

مقتول صحافی کے بیٹوں کا امریکا میں بیان

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

گذشتہ ماہ استنبول میں قائم سعودی عرب کے قونصل خانے میں پرلڑائی میں‌ مارے جانے والے صحافی جمال خاشقجی کے دونوں بیٹوں نے اپنےوالد کے قتل کیس کی سعودی عرب کی جانب سے جاری تحقیقات پر اطمینان کا اظہار کیا ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ ہمیں جمال خاشقجی کے قتل کی سعودی عرب کی جانب سے کی جانے والی تحقیقات کی شفافیت پر مکمل یقین ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق مقتول صحافی جمال خاشقجی کے بیٹوں صلاح اور عبداللہ نے امریکی ٹی وی چینل "سی این این" کو دیے گئے انٹرویو میں کہا کہ ہم اپنے والد کے قتل کے معاملے کو سیاسی رنگ دلوانے کی تمام کوششوں کو مسترد کرتے ہیں۔

جمال خاشقجی کے قتل کے بعد ان کے بیٹوں کا امریکی ٹی وی چینل کو یہ اپنی نوعیت کا پہلا انٹرویو ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ ہم سعودی عرب میں جاری تحقیقات کے نتائج کے منتظر ہیں۔

صلاح خاشقجی نے کہا کہ شاہ سلمان نے انہیں یقین دلایا ہے کہ ان کے والد کے قتل میں جو بھی ملوث ہوا اسے سزا دی جائے گی۔ مجھے یقین ہے کہ خادم الحرمین الشریفین اپنے وعدے پرعمل درآمد کریں گے۔ انہوں نے اپنے وعدے پرعمل کیا ہے اور تحقیقات شروع کرائی ہیں، ورنہ سعودی عرب میں اس کیس کی تحقیقات نہ کی جاتیں۔

صلاح نے سعودی عرب واپسی کے بارے میں‌بات کرتے ہوئے کہا کہ وہ عن قریب جدہ واپس جائیں گے جہاں وہ بنک میں اپنی ملازمت جاری رکھیں گے۔

خیال رہے کہ صحافی جمال خاشقجی کو 2 اکتوبر کو استنبول میں قائم سعودی عرب کے قونصل خانے میں داخل ہونے کے بعد نہیں دیکھا گیا۔ سعودی عرب نے دعویٰ‌کیا ہے کہ خاشقجی کو قونصل خانے میں جانے کے بعد قتل کردیا گیا تھا تاہم اس کارروائی کی اجازت سعودی عرب کی حکومت کی طرف سے نہیں لی گئی تھی۔