.

داعش تنظیم کے عسکری وجود کا خاتمہ ایک ماہ کے اندر ہو جائے گا : ایس ڈی ایف

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

شام میں سیرین ڈیموکریٹک فورسز (ایس ڈی ایف) کے کمانڈر جنرل مظلوم کوبانی کا کہنا ہے کہ داعش تنظیم کی جانب سے اعلان کردہ "نام نہاد خلافت" کا عسکری وجود زیادہ سے زیادہ ایک ماہ کے اندر ختم ہو جائے گا۔

جمعرات کے روز فرانسیسی خبر رساں ایجنسی کو انٹرویو میں کوبانی نے کہا کہ داعش کے عسکری وجود کے خاتمے کا سرکاری اعلان آئندہ ماہ کے دوران کر دیا جائے گا۔ الحسکہ شہر کے قریب ایس ڈی ایف کے ایک مرکز میں عسکری وردی میں ملبوس کوبانی کا کہنا تھا کہ زیادہ سے زیادہ ایک ماہ میں عراقی سرحد پر پہنچ کر وہاں کے علاقے کو بارودی سرنگوں سے پاک کر دیا جائے گا اور علاقے میں رپوش مسلح گروپوں کا تعاقب کیا جائے گا۔

کرد اور عرب جنگجوؤں پر مشتمل ایس ڈی ایف 2015 میں تشکیل دی گئی تھی۔ کرد پیپلز پروٹیکشن یونٹس کو ایس ڈی ایف میں ریڑھ کی ہڈی کی حیثیت حاصل ہے۔ واشنگٹن کے زیر قیادت بین الاقوامی اتحاد کی سپورٹ سے ایس ڈی ایف نے داعش تنظیم کے خلاف بھرپور لڑائی کی اور اسے شام کے شمال اور مشرق میں وسیع علاقوں سے نکال باہر کیا۔

کوبانی کے مطابق اکتوبر 2017 میں داعش کو شام میں اس کے نمایاں ترین گڑھ الرقہ شہر سے باہر نکال دیے جانے کے بعد تنظیم نے نئی حکمت عملی اپنائی۔ داعش نے ہر جگہ اپنے غیر فعال گروپوں کو متحرک کیا ، خفیہ صورت میں لوگوں کی بھرتی کی اور جنگجوؤں اور عام شہریوں کے خلاف خود کش کارروائیاں ، دھماکے اور ہلاکتوں کی کارروائیاں انجام دیں۔

کوبانی نے بتایا کہ ایس ڈی ایف مذکورہ گروپوں کے تعاقب میں اپنی سکیورٹی اور انٹیلی جنس تنظیموں پر خصوصی طور سے انحصار کرے گی۔ ہم بڑے پیمانے پر جاری عسکری کارروائیوں کو درست سکیورٹی کارروائیوں میں تبدیل کر دیں گے۔

یاد رہے کہ شدید نقصانات کے باوجود داعش تنظیم اپنے غیر فعال گروپوں کے ذریعے ایس ڈی ایف اور بین الاقوامی اتحاد کے خلاف حملے کرنے کی قدرت رکھتی ہے۔ اس سلسلے میں آخری کارروائی میں پیر کے روز الحسکہ کے جنوبی دیہی علاقے میں ایک امریکی قافلے کو خود کش دھماکے کا نشانہ بنایا گیا۔ اس کے نتیجے میں قافلے کے ہمراہ موجود کرد جنگجوؤں میں سے پانچ ہلاک ہو گئے۔