امریکی سینیٹ : شام سے انخلا سے متعلق ٹرمپ کے فیصلے میں ترمیم منظور

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

امریکی سینیٹ نے نے پیر کے روز شام اور افغانستان سے امریکی افواج کے انخلا سے متعلق صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے فیصلے پر نتقید کے حوالے سے ترمیم کو بڑے پیمانے پر منظور کر لیا۔ یہ پیش رفت صدر کی ریپبلکن پارٹی کے اندر وسیع مخالفت کا واضح اشاریہ ہے۔

ٹرمپ کے بیان کی براہ راست مخالفت میں حالیہ ترمیم میں کہا گیا ہے کہ "سینیٹ یہ محسوس کرتی ہے کہ امریکا کو اس وقت شام اور افغانستان میں سرگرم دہشت گرد گروپوں کے خطرے کا سامنا ہے لہذا امریکا کی جانب سے جلد انخلا ،،، تمام پیش رفت اور اسی طرح قومی سلامتی کو خطرے میں ڈال سکتا ہے"۔

سینیٹ میں 70 ارکان نے اس ترمیم کے حق میں جب کہ 26 نے مخالفت میں ووٹ دیا۔ اس ترمیم کو مشرق وسطی میں امن سے متعلق جامع قانون کا حصہ بنا دیا جائے گا۔

مذکورہ ترمیم سینیٹ میں ریپبلکن رہ نما مچ مکونل نے پیش کی تھی۔ مشرق وسطی میں امن سے متعلق قانون میں شام پر نئی پابندیوں کا عائد کیا جانا شامل ہے۔ یہ قانون اسرائیل کا بائیکاٹ کرنے والی کمپنیوں کے ساتھ لین دین روک دینے کا ممکنہ فیصلہ کرنے والے امریکی مقامی حکام کو تحفظ بھی فراہم کرے گا۔ ترمیم کے متن کو منگل کی دوپہر حتمی رائے شماری کے لیےسینیٹ میں پیش کیا جائے گا۔ اس کے بعد یہ ایوان نمائندگان بھیج دیا جائے گا جہاں غالب اکثریت ڈیموکریٹس کی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں