حماۃ میں اسدی فوج اور اپوزیشن کےدرمیان 8 ماہ بعد گھمسان کی جنگ

سرکاری فوج نے متعدد مقامات پراپوزیشن سے چھین لیے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

شام میں صدربشارالاسد کے وفادار ذرائع ابلاغ نے خبر دی ہے کہ اسدی فوج نے شمال مغربی شہر حماۃ میں اپوزیشن کے ساتھ گھمسان کی جنگ کےبعد تزویراتی اہمیت کے حامل اہم گائوں اور ٹیلے پر قبضہ کرلیا ہے۔ یہ پیش رفت آٹھ ماہ کےبعد شامی اپوزیشن اور حکومتی فورسز کےدرمیان ہونے والی لڑائی کے نتیجے میں سامنے آئی ہے۔

اسد رجیم کے میڈیا وار مرکز طرف سے جاری ایک بیان میں‌کہا ہے کہ سرکاری فوج نے البانی گائوں اور عثمان ٹیلے پر قبضہ کرلیا ہے۔ یہ علاقے حماۃ کے شمال میں تزویراتی اور دفاعی اعتبار سے اہمیت کے حامل سمجھے جاتے ہیں۔

دمشق حکومت اور اس کے اتحادیوں کی طرف سے حماۃ میں اپوزیشن کے آخری گڑھ میں آٹھ ماہ میں یہ سب سے بڑی کارروائی ہے۔ 30 اپریل کےبعد سے جاری لڑائی میں یہ خدشہ ظاہر کیا جا رہا تھا کہ سرکاری فوج حماۃ اور اس کے مضافات میں کوئی بڑا فوجی آپریشن شروع کرسکتی ہے۔

شام میں انسانی حقوق کے لیے کام کرنے والی تنظیم آبزر ویٹری کے مطابق البانی اور اس کے اطراف میں ہونے والی لڑائی میں سوموار کو 20 افراد ہلاک ہوگئے۔

اپوزیشن کےنمائندہ جیش العزہ نے شمال مغربی شام میں کارروائی میں سرکاری فوج کا ٹینک تباہ کرنے اور اس میں موجود تمام فوجیوں کو ہلاک کرنے کا دعویٰ کیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں