.

ارجنٹائن میں حزب اللہ دہشت گرد تنظیم قرار، اثاثے منجمد

لاطینی امریکا میں ارجنٹائن حزب اللہ کو دہشت گرد قرار دینے والا پہلا ملک بن گیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ارجنٹائن کی حکومت نے لبنانی شیعہ ملیشیا حزب اللہ کو دہشت گرد تنظیم قرار دینے کے بعد اس کے اثاثے منجمد کر دیے ہیں۔ یہ اقدام ارجنٹائن میں ہونے والے دہشت گردی کے واقعات میں حزب اللہ کے ملوث ہونے کے تناظر میں کیا گیا ہے۔

بوینس آئرس میں ایک یہودی مرکز پر دہشت گردانہ حملے کی 25 ویں برسی کے موقع پر حزب اللہ کو دہشت گرد قرار دیا گیا۔ اس حملے میں 85 افراد ہلاک ہو گئے تھے اور اس کا الزام لبنانی حزب اللہ پرعاید کیا گیا تھا۔ ارجنٹائن کی حکومت نے یہودی مرکز پر حملے کا الزام ایران اور حزب اللہ پرعاید کیا مگر دونوں نے یہ الزام مسترد کر دیا تھا۔

جمعرات کو جب حزب اللہ کو بلیک لسٹ کرنے اور یہودی مرکز پرحملے کی برسی منائی گئی امریکی وزیر خارجہ مائیک پومپیو بھی موجود تھے۔

گذشتہ ہفتے ارجنٹائن کے صدر ماورییسو ماکری نے ایک صدارتی فرمان پر دستخط کیے تھے جس کے تحت ارجنٹائن حزب اللہ کو دہشت گرد قرار دینے والا لاطینی امریکا کا پہلا ملک بن گیا تھا۔

یاد رہے کہ ارجنٹائن کے دارالحکومت میں بوینس آئرس میں 18 جولائی 1994 ایک یہودی تنظیم کے مرکز میں‌ ہونے والے بم دھماکوں‌ میں 85 افراد ہلاک ہو گئے تھے۔ ارجنٹائن کی تاریخ میں دہشت گردی کا یہ سب سے بڑا خونریز واقعہ ہے۔