.

عراقی وزیراعظم عادل المہدی کی سعودی فرمانروا شاہ سلمان سے ملاقات

سعودی عرب کی سلامتی اور استحکام کے خواہاں ہیں:عادل المہدی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عراق کے وزیراعظم عادل المہدی نے سعودی عرب کے فرمانروا اور خادم الحرمین الشریفین شاہ سلمان بن عبدالعزیز سے ملاقات کی۔

دورہ سعودی عرب کے موقع پر ہونے والی اس ملاقات میں شاہ سلمان نے عراقی رہنما عبدالمہدی کا خیر مقدم کیا۔ دونوں رہ نمائوں نے دوطرفہ امور، بغداد اور ریاض کے مشترکہ مفادات کے حوالے سے تفصیلی تبادلہ خیال کیا۔

سعودی پریس ایجنسی "ایس پی اے" کے مطابق عراقی وزیراعظم انہوں نے حال ہی میں ابقیق اور خریص کے مقامات پر آرامکو کمپنی کی تیل تنصیبات پر تخریب کاری حملے کی مذمت کی اور اس حملے کے بعد پیدا ہونے والی صورت حال پر شاہ سلمان سے بات چیت کی۔

جمہوریہ عراق کے وزیراعظم عادل عبد المہدی نے آرامکو حملوں کے بعد سعودی عرب کے ساتھ یکجہتی اور مملکت کی سلامتی اور استحکام کے لیے نیک خواہشات کا اظہار کیا۔

شاہ سلمان نے عراقی وزیر اعظم سے بات چیت کے دوران کربلا میں ہونے والے مجرمانہ بم دھماکے کی مذمت کی اور متاثرین کے اہل خانہ اور برادر عراقی عوام سے اظہار تعزیت کیا۔ انہوں نے کربلا بم دھماکے میں زخمی ہونے والوں کی جلد صحت یابی کے لئے دعا کی۔

اس موقع پر مختلف شعبوں میں دوطرفہ تعاون کو مستحکم بنانے اور باہمی سلامتی اور مشترکہ مفادات کے لیے کام اور دونوں ملکوں کے درمیان ہم آہنگی کو فروغ دینے پر اتفاق کیا گیا۔

ملاقات میں مکہ معظمہ کے گورنر اور شاہ سلمان کے خصوصی مشیر شہزادہ خالد الفیصل بن عبد العزیز، وزیر داخلہ شہزادہ عبد العزیز بن سعود بن نائف بن عبد العزیز، قومی سلامتی کے مشیر موسیٰ بن محمد العیبان، وزیر تجارت و سرمایہ کاری، وزیر بلدیات ودیہی امور ماجد بن عبداللہ القصبی اورعراق میں سعودی عرب کے سفیرعبد العزیز بن خالد الشمری نے شرکت کی۔

دوسری طرف عراقی وزیراعظم کے ہمراہ نائب وزیراعظم اور وزیر پٹرولیم ثامر الغضبان، وزیراعظم کے پرنسپل سیکرٹری محمد ھاشم، محکمہ قومی سراغرسانی کے سربراہ مصطفی الکاظمی اور جمہوریہ عراق کے سعودی عرب میں قونصل جنرل احمد حسن زہیر کے علاوہ دیگر عراقی راہ نما بھی موجود تھے۔