.

پیدائشی نقص کو چیلنج کر کے کامیابیاں حاصل کرنے والے سعودی نوجوان کی کہانی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

محبت مجھے اُن جوانوں سے ہے ، ستاروں پہ جو ڈالتے ہیں کمند ... عبدالعزیز العیونی بھی اسی طرح کا ایک سعودی نوجوان ہے جس کو Down Syndrome (پیدائشی حالت جس میں دماغی خلل ہوتا ہے اور چہرہ منگول قوم کے افراد سے مشابہ ہوتا ہے) کی بیماری اُس کی خواہشات کی تکمیل سے نہ روک سکی۔ العیونی کی زندگی بھرپور کامیابیوں سے معمور ہے۔ اس نے مملکت میں مسلسل پانچ مرتبہ تیراکی کی چیمپین شپ جیتی۔ اس کے علاوہ وہ جوڈو میں پانچ بیلٹس حاصل کر چکا ہے۔ فی الوقت وہ ریسکیو اور غوطہ خوری کی تربیت حاصل کر رہا ہے۔

سعودی نوجوان کی والدہ نے العربیہ ڈؑاٹ نیٹ سے بات کرتے ہوئے بتایا کہ ان کا بیٹا "درّاجتی" سائیکلنگ ٹیم کا رکن ہے اور تعلیم کے میدان میں بھی بہترین کارکردگی کا حامل ہے۔ انہوں نے مزید بتایا کہ اللہ کی مشیت سے عبدالعزیز ڈاؤن سنڈروم میں مبتلا ہے اور اس کو سماعت میں دشواری محسوس ہوتی ہے تاہم یہ معذوری اس کی امتیازی کامیابیوں کی راہ میں رکاوٹ نہیں بنی۔

دوسری جانب عبدالعزیز العیونی کا کہنا ہے کہ "میری والدہ نے مجھے کامیاب دیکھنے کے حوالے سے کسی موقع کو نظر انداز نہیں کیا۔ انہوں نے میرے لیے اہداف مقرر کیے اور میرے اندر عزم اور ارادہ پیدا کیا ... میں اپنی پیدائش کے بعد سے خود کے اندر ایک ہیرو کو دیکھتا ہوں جو چیلنجوں سے ٹکر لیتا ہے۔ میری والدہ خود کو روئے زمین پر سب سے زیادہ طاقت ور خاتون محسوس کرتی ہیں ، انہوں نے میرے حوالے سے یا میری جانب سماج کی نظروں کے حوالے سے کبھی کوئی شرمندگی یا عار محسوس نہیں کی۔ وہ جانتی ہیں کہ اللہ تعالی مجھے یا اُن کو ہر گز رسوا نہیں کرنے گا "۔