.

چار سالہ تعطل کے بعد یمنی شہر حضر موت سے دوبارہ پروازیں شروع

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن کے جنوب مشرقی ساحلی علاقے حضر موت میں چار سال سے بند الریان ہوائی اڈے سے گذشتہ روز فلائیٹ آپریشن بحال ہو گیا ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق بین الاقوامی الریان ہوائی اڈے پر بدھ کے روز چار سال بعد ایک مسافر پرواز اتری۔

قبل ازیں حضرموت کے گورنر فرج البحسنی نے ایک بیان میں کہا تھا کہ شہر کے ہوائی اڈے کو پروازوں کے لیے دوبارہ بحال کر دیا گیا ہے اور پروازوں کی آمد ورفت شروع ہونے والی ہے۔

الریان ہوائی اڈے کے ذرائع نے العربیہ ڈاٹ نیٹ کو بتایا کہ گذشتہ روز قاہرہ سے آنے والے ایک یمنی طیارے کو مقامی وقت کے مطابق صبح سات بجے الریان ہوائی اڈے پراترنے کی اجازت دی گئی۔

گذشتہ جمعرات کو یمن کی سول ایوی ایشن اتھارٹی نے الریان بین الاقوامی ہوائی اڈے کو کھولنے کا اعلان کیا تھا۔

خیال رہے کہ اس ہوائی اڈے کو سنہ 2015ء میں القاعدہ کے اس پر قبضے کے بعد بند کردیا گیا تھا۔ سنہ 2016ء میں یمنی حکومت اور اس کی حامی عرب فوج نے ملک کر اس ہوائی اڈے کو دہشت گردوں سے بازیاب کر لیا تھا مگر اس پر پروازوں کی آمد ورفت بند کردی گئی تھی۔