.

حزب اللہ کے وفادار ٹی وی چینل کا عراقی افسر پرقاسم سلیمانی کے قتل میں معاونت کا الزام

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

لبنانی شیعہ ملیشیا حزب اللہ نے عراقی انٹیلی جنس کے ایک سینیر افسر کے خلاف اشتعال انگیزی مہم شروع کی ہے اور دعویٰ کیا ہے کہ 'طلال ناجی' نامی فوجی افسر نے بغداد کے بین الاقوامی ہوائی اڈے پر 3 جنوری کو ایرانی کمانڈر قاسم سلیمانی کو قتل کرنے کے امریکی آپریشن میں مدد فراہم کی تھی۔

خیال رہے کہ ایرانی پاسداران انقلاب کی سمندر پار کارروائیوں کی ذمہ دار فیلق القدس کے کمانڈر قاسم سلیمانی کو تین جنوری کو امریکی فوج نے ایک فضائی آپریشن میں بغداد کے بین الاقوامی ہوائی اڈے پر ہلاک کر دیا تھا۔

حزب اللہ اور ایران نے دعویٰ‌ کیا ہے کہ اس حملے میں عراق کے متعدد انٹیلی جنس افسروں نے امریکی فوج کو معلومات فراہم کی تھیں۔

حزب اللہ کے مقرب 'صابرین نیوز' چینل نے ٹیلی گرام پر پوسٹ کی گئی ایک خبر کے ساتھ عراقی انٹیلی جنس افسر طلال ناجی کی تصویر بھی پوسٹ کی ہے اور کہا ہے کہ طلال ناجی ایرانی کمانڈر قاسم سلیمانی کی آمد ورفت پر نظر رکھے ہوئے تھا۔ اس نے امریکا کو قاسم سلیمانی کے بارے میں معلومات فراہم کی تھیں۔

ٹی وی چینل کی رپورٹ کے مطابق طلا ناجی نے عراق کی الحشد الشعبی ملیشیا کے ساتھ لبنانی اور ایرانی مشیروں ملاقاتوں پرنظر رکھی ہوئی تھی۔ ناجی حسم مقاومہ اور علی حیدر نامی مشیروں کی نقل وحرکت کی تصاویر بناتا رہا ہے۔

اس کے ساتھ ساتھ ٹی وی چینل نے ناجی پر قاسم سلیمانی کےقتل کے بعد اس کا بیگ چوری کرنے کا الزام عاید کیا ہے۔ ٹی وی چینل کے مطابق طلال ناجی نے مقتول قاسم سلیمانی کا بیگ چوری کیا اور اس کے بعد اس بیگ کا کوئی پتا نہیں۔