.

یمن: حوثی شدت پسند اپنے والدین کو بے رحمی سے قتل کر کے فرار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن کی مغربی گورنری الحدیدہ میں ایک حوثی باغی جنگجو نے الجراحی کے مقام پر اپنے والدین کو بے رحمی کے ساتھ قتل کر دیا اور خود فرار ہو گیا ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق حوثی عسکریت پسند جس نے اپنے والدین کو قتل کیا ہے وہ ایک ماہ قبل ہی حوثی ملیشیا میں بھرتی ہوا تھا۔ اطلاعات کے مطابق ملزم نے اپنے والدین اور ایک پڑوسی جو عہدے کےاعتبار سے ایک کرنل ہے کو قتل کر دیا۔ مقتول پڑوسی اس کے والدین کی طرف سے مدد کے لیے پکارنے پر پہنچا تھا۔

حوثی جنگجو جس کی شناخت محمد علی عبداللہ واصل کے نام سے کی گئی ہے نے اندھا دھند فائرنگ کی جس کے نتیجے میں اس کی ہمشیرہ سمیت تین لڑکیاں زخمی ہو گئیں۔ اس کے بعد ملزم خود فرار ہو گیا۔

مقتولین میں اس کی عمر رسیدہ ماں، باپ علی عبداللہ واصل اور کرنل حسن عبید واصل شامل ہیں۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ اپنے والدین کو قتل کرنے والا شدت پسند ایک ماہ قبل حوثیوں میں‌ بھرتی ہونے یے بعد مغربی ساحلی محاذ پر تعینات تھا۔ محاذ سے واپس گھر آنے کے بعد اس کے اپنے اہل خانہ کے ساتھ لڑائی جھگڑے شروع ہوگئے جس کے نتیجے میں آخر کار اس نے اپنے والدین کو موت کے گھاٹ اتار دیا۔