.

صائب عریقات کے بعد دو مزید اہم فلسطینی عہدے داران کرونا کا شکار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

تنظیم آزادی فلسطین (پی ایل او) کی مجلس عاملہ کے رکن عزام الاحمد نے اعلان کیا ہے کہ وہ اور سماجی بہبود کے وزیر احمد مجدلانی کرونا وائرس سے متاثر ہو گئے ہیں۔

عزام نے فیس بک پر اپنی پوسٹ میں بتایا کہ صدر محمود عباس کے ساتھ ملاقات کے پیشگی وقت کی بنیاد پر ہونے والے معمول کے کرونا ٹیسٹ کے نتیجے میں اس بات کی تصدیق ہو گئی کہ وہ اور ڈاکٹر احمد مجدلانی وائرس کا شکار ہو چکے ہیں۔

عزام کے مطابق وہ اس وائرس کی کوئی علامات محسوس نہیں کر رہے ہیں اور کرونا سے متاثر ہونے کی تصدیق ٹیسٹ کی بنیاد پر ہوئی ہے۔ انہوں نے باور کرایا کہ وہ قرنطینہ کی پابندی کرتے ہوئے ڈاکٹروں کی ہدایات پر عمل کریں گے۔

اس سے قبل تنظیم آزادی فلسطین کی مجلس عاملہ کے سکریٹری جنرل صائب عریقات کی طبیعت بگڑ جانے پر انہیں اتوار کے روز تل ابیب کے ایک ہسپتال منتقل کر دیا گیا تھا۔ رواں ماہ کے اوائل میں اعلان کیا گیا تھا کہ عریقات مغربی کنارے میں اپنے گھر میں کرونا وائرس میں مبتلا ہو گئے۔

عریقات کے اہل خانہ نے منگل کے روز تصدیق کی تھی کہ فلسطینی عہدے دار کی حالت اب بہتر ہے۔ اس دوران عریقات کی وفات کے حوالے سے خبریں بھی گردش میں آئی تھیں۔

فلسطینی سرکاری خبر رساں ایجنسی وفا نے اہل خانہ کے حوالے سے بتایا کہ عریقات ابھی انتہائی نگہداشت کے یونٹ میں زیر علاج ہیں اور انہیں مصنوعی طریقے سے سانس فراہم کیا جا رہا ہے۔

تنظیم آزادی فلسطین کے با اثر ترین گروپ الفتح موومنٹ کے رکن صائب عریقات کا شمار کئی دہائیوں سے فلسطینی قیادت میں نمایاں ترین شخصیات میں ہوتا ہے۔ وہ پی ایل او کی مجلس عاملہ کے سکریٹری جنرل کے منصب پر فائز ہیں۔ اسی طرح وہ فلسطینی صدر محمود عباس کے سینئر مشیروں میں سے ہیں۔ عریقات سابق صدر یاسر عرفات کے دور میں بھی اعلی منصبوں پر کام کر چکے ہیں۔