.

عدن ہوائی اڈے پرحملے میں ریڈ کراس کی ترجمان کو بچانے والے سپاہی کی تحسین

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن کی عبوری دارالحکومت عدن میں 30 دسمبر کو عدن ہوائی اڈے پر ہونے والے خونی بم حملوں کے دوران ریڈ کراس کی ترجمان کو بچانے میں مدد کرنے والے ایک فوجی سپاہی کے اعزاز میں‌ خصوصی تقریب کا انعقاد کیا گیا۔ یمنی سپاہی نے حملوں کے وقت ریڈ کراس کمیٹی کی زخمی ہونے والی ترجمان یارا خواجہ کو اس کے زخمی ہونے کے محفوظ مقام پر منتقل کرنے میں اس کی مدد کی تھی۔ یارا خواجہ کو بچانے کی کوشش کے دوران اس کی ایک تصویر بھی سامنے آئی تھی جس میں خاتون ترجمان کو یمنی سپاہی کے کندھے کے سہارے چلتے دیکھا جا سکتا ہے۔

عدن پولیس کے ڈائریکٹر جنرل میجر جنرل مطہر الشعبی نے ہوائی اڈے کی حفاظت کرنے والی فوج کے جوان یحییٰ محمد فضل الحربی کو بین الاقوامی ریڈ کراس کے ملازمین کی عدن بین الاقوامی ہوائی اڈے پرحملے میں ان کی جان بچانے میں مدد کرنے پر اس کی تعریف کی۔

عدن سیکیورٹی کے ڈائریکٹر نے سپاہی فضل الحربی کی حوصلہ افزائی کرتے ہوئے کہا کہ ایک سپاہی کی تکریم ہوائی اڈے اور عبوری دارالحکومت میں سیکیورٹی کی خدمات انجام دینے والے تمام سپاہیون کی تحسین ہے۔ مشکل حالات میں امن وامان کی ذمہ داریاں انجام دینے والے ہمارے تمام سپاہی قوم کے ہیرو ہیں۔

اس موقعے پر سپاہی فضل الحربی نے کہا کہ ہوائی اڈے پر میں نے جو کچھ کیا وہ غدار عناصر کی دہشت گردی کے نتیجے میں زخمی ہونے والوں کی مدد اور اپنا فرض پورا کرنا تھا۔ میں ریڈ کراس کی ترجمان اور دوسرے کارکنوں کو بچانے میں ان کی مدد کر کے اپنا فرض پورا کیا ہے۔

عدن کے بین الاقوامی ہوائی اڈے پر حملے میں زخمی ہونے کے بعد الحربی نے یارا خواجہ کی مدد کی تھی جس کی تصاویر سوشل میڈیا پر وائرل ہوئی تھیں۔ سوشل میڈیا پر بھی یمنی سپاہی کی تحسین کی گئی تھی اور ریڈ کراس کے کارکنوں کی مدد پر اس کی تعریف کی تھی۔