.

ریاض کے ہزاروں سال پرانے مقام اور جغرافیائی اہمیت کو جانیے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

تاریخی ورثے کے سعودی محقق احمد الوشمی کا کہنا ہے کہ ریاض کا علاقہ قومِ ثمود کے زمانے سے قدیم تاریخ کا حامل ہے۔ ریاض میں بسنے والے یہ سب سے پہلے لوگ تھے ،،، یہاں تک کہ 3500 سال قبل اس قوم پر اللہ کے نبی حضرت صالح علیہ السلام کو بھیجا گیا۔

معاصر عزیز ’’اخبار 24‘‘ نے الوشمی کے حوالے سے اپنی رپورٹ میں بتایا ہے کہ قومِ ثمود ریاض کا نام پڑنے سے قبل اس علاقے میں سکونت پذیر تھی۔ اس علاقے کی جغرافیائی خصوصیت نے اسے اپنے اطراف موجود مختلف تہذیبوں کے ساتھ مربوط کر دیا۔

سعودی محقق کے مطابق یہ علاقہ تمام معروف تہذیبوں کے وسط میں تھا۔ اس کے شمال میں رُومی اور اغریقی تہذیبیں، شمال مشرق میں آشوری، فارسی، کنعانی اور ثمودی تہذیبیں اور مشرق میں ہندوستانی تہذیب وجود رکھتی تھی۔ علاوہ ازیں اس کے مغرب میں حجاز کا علاقہ موجود تھا۔