.

تاریخی کارروائی : ایران سے آنے والی ہیروئن کی بھاری مقدار رومانیہ میں ضبط

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

رومانیہ میں حکام نے اعلان کیا ہے کہ انہوں نے ملک کے جنوب مشرق میں کونسٹینٹا کی بندرگاہ پر 1500 کلو گرام کے قریب ہیروئن پکڑی ہے جو ایران سے اسمگل کی جا رہی تھی۔ یہ یورپی یونین کے کسی بھی رکن ملک میں حالیہ برسوں میں منشیات اسمگل کرنے کی ایک سب سے بڑی کوشش ہے۔

جمعرات کے روز متعلقہ حکام کی جانب سے جاری بیان میں بتایا گیا ہے کہ ضبط کی گئی ہیروئن کی کھیپ کا وزن 1452 کلو گرام ہے۔ یہ منشیات تعمیراتی سامان سے بھرے ہوئے ایک کارگو کنٹینر کے اندر چھپائی گئی تھی۔ کھیپ کو آخری منزل کے طور پر مغربی یورپ پہنچنا تھا۔ ریٹیل بلیک مارکیٹ میں اس کھیپ کی قیمت کا اندازہ تقریبا 4.5 کروڑ یورو لگایا گیا ہے۔ بیان کے مطابق یہ ضبطی کے حوالے سے ایک تاریخی کارروائی ہے۔ حالیہ برسوں میں یہ یورپی یونین میں ضبط کیے جانے کی دوسری بڑی کارروائی ہے"۔

رواں سال فروری میں ہالینڈ کی پولیس نے روٹرڈم کی بندرگاہ پر 1.5 ٹن ہیروئن پکڑی تھی۔

ادھر رومانیہ کی پولیس کے اعلان کے مطابق بدھ اور جمعرات کے روز رومانیہ اور مغربی یورپ کے دو اور ملکوں میں چھاپوں کے دوران میں ایک مبینہ نیٹ ورک کے 9 ارکان کو گرفتار کر لیا گیا۔ ان میں رومانیہ کے شہریوں کے علاوہ غیر ملکی شامل ہیں۔ اس وقت مذکورہ افراد سے تحقیقات جاری ہیں"۔

رومانیہ کی پولیس نے واضح کیا ہے کہ ہیروئن کی اس کھیپ کی ضبطی کئی ممالک میں عدلیہ کے حکام کے ساتھ شراکت داری سے عمل میں آئی۔ ان ممالک میں ہنگری، آسٹریا، جرمنی، ہالینڈ اور فرانس شامل ہے۔ علاوہ ازیں یورپی پولیس "یورو پول" اور فوجداری معاملات میں عدالتی تعاون کی ایجنسی "یورو جسٹ" کی بھی سپورٹ حاصل رہی۔

یاد رہے کہ ایک ہفتہ قبل ایران کی سرحد کے نزدیک نامعلوم افراد کے ساتھ فائرنگ کے تبادلے میں آذربائیجان کی سرحدی فورس کے دو ارکان ہلاک ہو گئے تھے۔ ذمے داران کے مطابق جائے واقعہ پر دس کلو گرام منشیات ملی تھی۔