.

رواں سال مِنیٰ میں حجاج کی رہائش کے لیے 6 ٹاور اور 70 خیمے مختص

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی وزارت حج و عمرہ نے رواں سال عازمین حج کی رہائش کے لیے مِنیٰ میں 6 ٹاور اور 70 خیمے مختص کیے ہیں۔ حجاج کرام کی سلامتی اور تحفظ اور کرونا وائرس کی روک تھام یقینی بنانے کے لیے تمام احتیاطی اقدامات اور حفاظتی تدابیر کا انتظام کیا جا رہا ہے۔

قومی کمیشن برائے حج و عمرہ کے رکن ہانی العمیری نے العربیہ ڈاٹ نیٹ سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ رواں سال فی حاجی مختص رقبے کو گذشتہ برسوں کے مقابلے میں بڑھا دیا گیا ہے۔ منی کے ٹاور میں ہر حاجی کے لیے 4.37 مربع میٹر جگہ مختص ہو گی۔ منی کے خیمے میں ہر حاجی کے لیے 4 مربع میٹر کی جگہ مختص ہو گی جب کہ منی کے خصوصی پیکج میں ہر حاجی کے لیے 5.33 مربع میٹر کی جگہ مختص ہو گی۔

خیموں اور ٹاوروں میں حجاج کرام کی آمد و رفت کے عمل کو منظم رکھنے کے لیے سیکورٹی گارڈز مختص کیے گئے ہیں۔ اس دوران میں مناسک حج کے پانچ روز حجاج کرام کے درجہ حرارت کی جانچ کو بھی یقینی بنایا جائے گا۔

واضح رہے کہ مِنیٰ کا مقام مکہ مکرمہ اور مزدلفہ کے بیچ حدود حرم کے اندر واقع ہے۔ یہ مسجد حرام کے شمال مشرق میں 7 کلو میٹر کے فاصلے پر واقع ہے۔ منی کے شمالی اور جنوبی جانب پہاڑیاں ہیں۔ مکہ مکرمہ کی سمت میں جمرہ العقبہ واقع ہے اور مزدلفہ کی سمت وادی محسّر واقع ہے۔