.

سعودی عرب : الاحساء میں کھجور کی سالانہ پیداوار 15 لاکھ ٹن

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب میں الاحساء ضلع میں کھجوروں کا پھل اتارنے کا سیزن شروع ہو گیا ہے۔ سیزن میں الاحساء کی منڈیوں میں مختلف اقسام کی کھجوریں پہنچیں گی اور ساتھ ہی سیزن کے حوالے سے مملکت کے اندرون اور بیرون خریداری کی سرگرمیاں دیکھی جائیں گی۔ یہ سیزن سماجی اور معاشی لحاظ سے اہم ترین موقع ہوتا ہے جس کا انتظار کاشت کار ہر سال کرتے ہیں۔

سعودی عرب کے مشرق میں واقع الاحساء کا علاقہ دنیا بھر میں کھجور کے درختوں کے سب سے بڑے قدرتی فارمز کے حوالے سے جانا جاتا ہے۔ یہاں 20 لاکھ سے زیادہ کھجور کے درخت ہیں جو سالانہ اعلی ترین معیار کی تقریبا 15 لاکھ ٹن پیداوار دیتے ہیں۔

سعودی سرکاری خبر رساں ایجنسی ’ایس پی اے‘ کی رپورٹ کے مطابق کھجور کے اتارے جانے کے اس سیزن میں نیلام کا انعقاد ہوتا ہے۔ یہ نیلام ’کنگ عبداللہ ڈیٹ سِٹی‘ کے وسط میں ہوتا ہے۔ یہاں کاشت کار، تاجر اور عوام سب اکٹھا ہوتے ہیں۔

سیزن میں کھجور اتارنے کا کام نماز فجر کے بعد سے لے کر دوپہر تک جاری رہتا ہے۔ کاشت کار روایتی طریقے سے کھجور کے درخت پر چڑھ کر کھجوروں کے گچھے کاٹتا ہے اور پھر رسی کے ذریعے نیچے بھیجتا ہے۔ کاشت کار کے گھرانے کے لوگ اقسام کے لحاظ سے کھجوروں کی چھانٹی کرتے ہیں۔

کنگ فیصل یونیورسٹی میں تحقیقاتی مرکز کے ڈائریکٹر ڈاکٹر ناشی القحطانی کے مطابق الاحساء دنیا بھر میں کھجوروں کی کاشت اور پیداوار کے لحاظ سے سب سے بڑا نخلستان ہے۔ یہ پانی کی فراوانی اور زمین کی زرخیزی کے باعث مشہور ہے۔ اس نخلستان میں کاشت کیے گئے علاقے کا مجموعی رقبہ 19770 ایکڑ ہے۔ الاحساء کی مشہور ترین کھجوروں میں الخلاص ، الرزيز ، الشيشی ، الہلالی اور الشہل شامل ہیں۔ سعودی عرب میں کھجوروں کے درختوں کی مجموعی تعداد 3 کروڑ سے زیادہ ہے۔ ان میں تقریبا 9.5 % الاحساء ضلع میں ہیں۔ الاحساء میں کھجور کی 32 فیکٹریاں ہیں جو کھجور کی مختلف مصنوعات تیار کرتی ہیں۔

الاحساء تزویراتی محلِ وقوع کا حامل ہے۔ یہاں سے مملکت کے مختلف علاقوں اور خلیج تعاون کونسل کے ممالک تک کھجوروں کا پہنچنا آسان ہوتا ہے۔