غزہ شہر میں اسرائیلی فوج کامرکزی شاہراہ پرفضائی حملہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

اسرائیلی فوج نے اتوار کے روز غزہ شہرمیں ایک اہم سڑک پرفضائی حملہ کیا ہے جس کے نتیجے میں چار بچّوں سمیت متعدد فلسطینی مارے گئے یا زخمی ہوئے ہیں۔

اس شاہراہ پرایک کار اور گھوڑا گاڑی کو فضائی حملے میں نشانہ بنایا گیا ہے۔غزہ شہر میں واقع الشفا اسپتال نے اطلاع دی ہے کہ دھماکے کی جگہ سے تین لاشیں ایمرجنسی میں پہنچائی گئی ہیں۔

غزہ کی پٹی میں اسرائیل اورفلسطینی عسکریت پسندوں کے درمیان اتوار کے روز بھی بمباری اور راکٹ باری کا تبادلہ ہوا ہے جبکہ اس دوران میں مصر کی ثالثی میں جنگ بندی کی اطلاعات بھی سامنے آئی ہیں۔

اسرائیل کا کہنا ہے کہ اس نے غزہ میں ایک پرہجوم پناہ گزین کیمپ میں ایک اپارٹمنٹ عمارت پر فضائی حملہ کیا ہے۔اس میں تحریک جہاداسلامی کا ایک سینیرکمانڈر ماراگیا ہے۔

اسرائیلی فوج کا اس فلسطینی مزاحمتی گروپ کے خلاف یہ دوسرا اہدافی حملہ تھا۔ایران کی حمایت یافتہ تنظیم جہاداسلامی نے اس کے جواب میں اسرائیل پر سیکڑوں راکٹ داغے ہیں اورسرحد پار لڑائی کا مکمل جنگ میں تبدیل ہونے کا خطرہ برقرار ہے۔

واضح رہے کہ مئی 2021 میں اسرائیل کے ساتھ گیارہ روزہ جنگ لڑنے والی جماعت اورغزہ کی حکمران حماس فی الحال تازہ لڑائی سے لاتعلق نظرآئی ہے۔

ایسا لگتا ہے کہ حماس کولڑائی میں شریک ہونے کی صورت میں اسرائیل کے ساتھ غیرمتزلزل معاشی مفاہمت بشمول غزہ کے ہزاروں باشندوں کے لیے اسرائیلی ورک پرمٹ ختم ہونے کا خدشہ ہے جبکہ لوگوں کے معاشی حالات کی بہتری سے اس کے علاقے پرکنٹرول کو تقویت ملی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں