گئے وقتوں میں بہ طور دوا استعمال ہونے والے حساوی تربوز کے معدوم ہونے کا خطرہ

سعودی عرب کے علاقے الاحسا میں کاشت کیے جانے والے میٹھے اور خوشبودار تربوز کے ان گنت طبی فوائد ہیں مگر یہ پھل ناپید ہوتا جا رہا ہے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
4 منٹس read

سعودی عرب کے مشرقی علاقے الاحساء میں موسم گرما کی گرمی کے آغاز کے ساتھ ہی مقامی لوگ خوش ذائقہ اور خوشبودار"حساوی تربوز" کے پھلوں کی کٹائی شروع کر دیتے ہیں۔ حساوی تربوز کو قدیم لوگ ایک ایسا پھل سمجھتے تھے جو بہت سی بیماریوں کے علاج میں مفید ثابت ہوتا ہے۔ آج کے دور میں اس پھل کو گرمیوں کے موسم کا تحفہ سمجھا جاتا ہے۔

تاہم متعدد ماہرین نے اس تربوز کے ناپید ہونے کا خدشہ ظاہر کیا ہے جس کی وجہ گذشتہ برسوں کے دوران اس کی پیداوار میں کمی اور مارکیٹ میں اس کی قلت ہے۔ اس کے علاوہ اس پھل کے معدوم ہونے کے خطرات میں اس کی پیدوار کی مدت ہے جو صرف ڈیڑھ ماہ پر محیط ہوتی ہے۔

الاحساء کے مقامات پر کاشت کیے جانے والے تربوز کو ان موسمی فصلوں میں سے ایک سمجھا جاتا ہے جو الاحساء نخلستان میں سینکڑوں سالوں سے وراثت میں ملی ہے۔

یہ قدیم زرعی پیداوار کا حصہ ہے۔ تربوزکی یہ قسم اپنی الگ اور منفرد پہچان رکھتی ہے۔ مخصوص آب و ہوا میں کاشت ہونے والے تربوز کا سائز، ذائقہ، کرکرا پن اور خوبصورت خوشبو حساوی تربوز کی پہچان ہے۔

حساوی تربوز سردیوں کے آخر میں اور معتدل موسمی حالات میں اگایا جاتا ہے۔ اس کے بیج کو لمبی چوڑائیوں میں دو میٹر کے فاصلے پر بویا جاتا ہے تاکہ پانی تمام پودوں کی جڑوں تک پہنچ جائے۔ اس کی کاشت کے لیے کھلی اور ہموار جگہ ہونی چاہیے۔ بہتر ہے کہ اسے لگانے کے لیے کافی جگہ دی جائے۔ پھل کو شہتیر یا تنگ رسیوں پر لٹکایا جا سکتا ہے۔ یہ کسی بھی معتدل آب و ہوا کے حالات جیسے گرین ہاؤس میں بھی اگایا جا سکتا ہے۔

اس حوالے سے ماہرین نے اس بات پر زور دیا کہ حساوی تربوز کی پیداوار میں کمی کی ایک بڑی وجہ پانی کی کمی اور خشک سالی کے نتیجے میں زمین کےکھارے پن میں اضافہ ہے۔

حساوی تربوز وقت کے ساتھ ساتھ پکتا ہے اور موسم گرما کے آغاز کے ساتھ فصل کی کٹائی میں 3 ہفتوں سے ایک ماہ تک کا وقت لگتا ہے۔ اس کی پیداوار کے آغاز پر اس کی قیمت زیادہ ہوتی ہے اور وقت کے ساتھ ساتھ قیمت میں اتار چڑھاؤ آتا ہے اور سیزن کےعروج پر اس کی قیمت کم ہوجاتی ہے۔

حساوی تربوز کے مارکیٹ میں آتے ہی اسے دسترخوان کا حصہ بنا لینا چاہیے کیونکہ اس کی نرمی کی وجہ سے اسے طویل عرصے تک ریفریجریشن میں محفوظ رکھنے میں دشواری پیش آتی ہے۔ یہ شکر سے بھرپور ہوتا ہے اور الاحسا کے لوگ اس سیزن میں تربوز کے ساتھ مہمانوں کی تواضع کو اہمیت دیتے ہیں۔

حساوی تربوز کے فوائد

ماہرخوراک و غذائیت نورہ محمد نے بتایا کہ حساوی تربوز بلڈ پریشر کو کم کرنے میں مدد کرتا ہے، دل اور شریانوں کی بیماریوں سے بچاتا ہے، اس میں پانی کی وافر مقدار ہوتی ہے جو کہ پیشاب کے بہاؤ کو بہتر بناتی اور گردے کی پتھری کو ختم کرنے میں مدد دیتی ہے۔

حساوی تربوز میں موجود پوٹاشیم خون میں یورک ایسڈ کی مقدار اور جسم میں نمکیات کی فیصد کو کم کرنے میں مدد کرتا ہے۔ تربوز فولک ایسڈ سے بھرپور ہوتا ہے۔ تربوز حاملہ خواتین کے لیے سوجن اور تیزابیت کے مسائل کو کم کرتا ہے۔ قبض کے مسئلے کا محفوظ علاج، آنتوں کی حرکت کو منظم کرنے میں مدد کرتا ہے۔

حساوی تربوز جلد کے لیے بھی بہت مفید ہے اس میں ہائیڈریشن، جھریوں کو کم کرنا، مہاسوں سے چھٹکارا اور دھوپ کی جلن کا علاج شامل ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں