ایران پرامن مقاصد کے لیے یورینیم افزودگی کی حدسے تجاوز نہ کرنے کا عہد کرے: جی سی سی

خلیج تعاون کونسل کا ایران کیساتھ جوہری مذاکرات میں سلامتی کے تمام مسائل شامل کرنے کی ضرورت پر زور

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

خلیج تعاون کونسل نے اتوار کے روز کہا کہ ایران کو چاہیے کہ پرامن مقاصد کے لیے یورینیم کی افزودگی کی حد سے تجاوز نہ کرنے کا عہد کرے۔ جی سی سی نے کہا کہ ایران کی جانب سے بین الاقوامی توانائی ایجنسی کے ساتھ مکمل تعاون کے عزم کی ضرورت ہے۔

کونسل نے ایران کے جوہری پروگرام کے حوالے سے ہونے والے تمام مذاکرات میں اپنی شرکت کی اہمیت پر زور دیا ۔ جی سی سی نے ایران کے ساتھ جوہری مذاکرات میں سلامتی کے تمام مسائل کو شامل کرنے کی ضرورت پر بھی زور دیا۔ خلیج تعاون کونسل نے کہا کہ ہر اس چیز سے نمٹنے کی ضرورت ہے جس سے میری ٹائم نیوی گیشن اور تیل کی تنصیبات کو خطرہ ہو۔

خلیج کی عرب ریاستوں کے لیے تعاون کونسل کی وزارتی کونسل کا 156 واں اجلاس اتوار کو جنرل سیکرٹریٹ کے ہیڈ کوارٹر ز میں سلطنت عمان کے وزیر خارجہ بدر بن حمد بن حمود البوسیدی کی سربراہی میں منعقد کیا گیا۔

خلیج تعاون کونسل کے اجلاس کا منظر
خلیج تعاون کونسل کے اجلاس کا منظر

جاری کردہ اعلامیہ کے مطابق وزارتی کونسل نے اسلامی جمہوریہ ایران کے ساتھ تعلقات کے بارے میں سپریم کونسل کے 43 ویں اجلاس میں فیصلوں کی توثیق کی اور اس کے ساتھ تعلقات کو مضبوط بنانے کی بنیادوں کو اچھی ہمسائیگی اور باہمی تعلقات کے اصولوں کے احترام کے ساتھ وابستہ کیا۔

اعلامیہ میں ایران کے ساتھ تعلقات کو بین الاقوامی اصولوں، قوانین اور معاہدوں، اندرونی معاملات میں عدم مداخلت، تنازعات کو پرامن طریقوں اور براہ راست بات چیت سے حل کرنے، طاقت کے استعمال یا دھمکی نہ دینے اور ہر وہ چیز جو خطے میں سلامتی، استحکام اور امن کے ستونوں کے تحفظ کی ضمانت دیتی ہے سے جوڑا گیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں