سعودی عرب: بیوی کے قاتل اس کے شوہر کا قصاص میں سرقلم

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب کی وزارت داخلہ کے زیراہتمام مملکت کےمشرقی صوبےمیں اپنی بیوی کے قتل میں ملوث مجرم کا قصاص میں سر قلم کردیا گیا ہے۔

وزارت داخلہ کی طرف سے جاری ایک بیان میں قرآن کی ایک آیت کا حوالہ دیا گیا ہے جس میں اللہ تعالیٰ نے فرمایا کہ’جو لوگ خدا اور اس کے رسول کے خلاف جنگ کرتے ہیں اور زمین میں فساد پھیلانے کی کوشش کرتے ہیں ان کی سزا یہ ہے کہ انہیں قتل کیا جائے یا سولی پر چڑھایا جائے یا ان کے ہاتھ پاؤں مخالف سمت سے کاٹ دیے جائیں یا ملک سے جلاوطن کر دیا جائے۔ ان کے لیے دنیا میں رسوائی اور آخرت میں بہت بڑا عذاب ہے‘۔

واضح رہے کہ اس کیس کے مرکزی ملزم فاضل بن منصور بن علی الہلال نے اپنی بیوی زینب بنت محمد بن حبیب العتوق کو ان کے بیڈ روم میں گلا گھونٹ کر قتل کر دیا۔ دونوں سعودی عرب کے شہری تھے۔

قتل کے بعد اس جرم کے شبے میں خاتون کے شوہر کو حراست میں لیا گیا جہاں تفتیش کے دوران اس نے بیوی کے قتل کی گھناؤنی واردات کا اعتراف کیا۔ اس کے بعد ملزم کا کیس خصوصی عدالت میں منتقل کیا گیا جہاں اس کے خلاف مزید ثبوت پیش کرنے کے بعد سزائے موت سنائی گئی تھی۔

اس کیس میں ملزم کو شفاف ٹرائل کا موقع دیا گیا۔ ملزم نے سزا کے خلاف اپیل عدالت میں اپیل دائر کی تھی مگر اپیل کورٹ نے بھی اس کی سزا برقرار رکھی۔ اس کے بعد سعودی عرب کی سپریم کورٹ نے بھی مجرم کی قصاص میں قتل کی سزا برقرار رکھی تھی۔ عدالتوں کے حتمی فیصلے کے بعد مجرم کو آج 10 جولائی 2023ء کو مشرقی علاقے میں قصاص میں قتل کردیا گیا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں