چاقو کے وار، کرنٹ: عراق میں ماں نے سوتیلے بچے کو تشدد کرکے قتل کردیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

عراق کے شہر بغداد میں ہولناک جرم پر مبنی واقعہ پیش آیا ہے جس نے پورے ملک کو ہلا کر رکھ دیا ہے۔ عراقی نیٹ ورک فار وومن رائٹس نے سکیورٹی ذرائع کے حوالے سے بتایا کہ بغداد میں ہفتہ کو ایک سات سالہ بچے کو اس کی سوتیلی ماں نے تشدد کرکے قتل کردیا۔

نیٹ ورک نے بتایا کہ بغداد کے علاقے الخطیب میں موسی ولاء کو اس کی سوتیلی ماں نے شدید تشدد کا نشانہ بنایا۔ اسے بجلی سے کرنٹ لگایا۔ پھر چھری اور نمک استعمال کی۔ اس کا سانس بھی بند کیا گیا۔

سوشل میڈیا پر پھیلائی گئیں بچے کی تصاویر نے عراق بھر میں غصے کو بھڑکا دیا۔ خاص طور پر موسی کی لاش پر خونی تشدد کے نشانات نے لوگوں کو مزید مشتعل کردیا۔

نیٹ ورک نے سیکیورٹی ذرائع کے حوالے سے بتایا کہ جرم میں ملوث خاتون کسی نفسیاتی یا ذہنی بیماری میں مبتلا نہیں تھی۔ سیکیورٹی سروسز نے بچے کے والد کی بیوی کو تفتیشی طریقہ کار کو مکمل کرکے گرفتار کرلیا۔

عراقی میڈیا نے بتایا کہ جمعرات کو بچے کی لاش گھر میں زمین پر پڑی ہوئی ملی اور وہ مر چکا تھا۔ اس کے جسم پر تشدد کے نشانات واضح طور پر دکھائی دے رہے تھے۔

ایک عینی شاہد کے مطابق بچے کے جسم پر شدید تشدد کے نشانات تھے۔ تفتیش کے بعد بیوی نے تشدد کے جرم کا اعتراف کرلیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں