ایران امریکاکے ساتھ قطرکی ثالثی میں تبادلہ اسیران کے معاہدے پرعمل درآمدکے لیے تیار ہے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ایران کے وزیرِ خارجہ نے جمعرات کو کہا کہ ایران امریکہ کے ساتھ قطر کی ثالثی میں ہونے والے معاہدے پر عمل درآمد کے لیے تیار ہے جس کے تحت واشنگٹن اور تہران دونوں پانچ پانچ قیدیوں کو رہا کریں گے اور جنوبی کوریا میں موجود ایرانی اثاثوں میں سے 6 بلین ڈالر جاری کر دیئے جائیں گے۔

امریکا ایران معاہدے کا وسیع خاکہ 10 اگست کو منظر عام پر آیا تھا جس کے تحت ایران کے زیرِ حراست امریکی شہریوں کو قطر کے بینکوں میں رقوم کی منتقلی کے بدلے جانے کی اجازت ہوگی اور امریکا میں قید پانچ ایرانیوں کو رہائی ملے گی۔

ایران کے سرکاری میڈیا کے مطابق وزیرِ خارجہ حسین امیر عبداللہیان نے اپنے قطری ہم منصب کے ساتھ ٹیلی فون پر گفتگو میں کئی مہینوں کے مذاکرات کے دوران دوحہ کے تعمیری کردار کی تعریف کی جس کے نتیجے میں یہ معاہدہ طے پایا۔

ایرانی میڈیا کے مطابق قطر کے وزیرِ اعظم اور وزیرِ خارجہ شیخ محمد بن عبدالرحمٰن الثانی نے کہا ہے کہ اسلامی جمہوریہ کی غیر منجمد رقوم قطری بینکوں کو بھیجنے کا عمل اگلے ہفتے کے اوائل میں مکمل کر لیا جائے گا۔

واشنگٹن نے جنوبی کوریا سے قطر کو 6 بلین ڈالر کے ایرانی فنڈز کی منتقلی کی اجازت دینے کے لیے پابندیاں ختم کر دی ہیں جو اس بات کی نگرانی کرے گا کہ ایران کے مذہبی حکمران انسانی امداد کی اشیاء کی خریداری کے لیے فنڈز کیسے خرچ کریں گے۔

ایران کی وزارتِ خارجہ کے ترجمان نے پیر کو کہا کہ یہ معاہدہ آنے والے دنوں میں متوقع ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں