ایران کی وزارتِ دفاع کی فیکٹری میں آتش زدگی: رپورٹ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ایران کے سرکاری ٹی وی نے جمعہ کو رپورٹ کیا کہ دارالحکومت کے شمال میں ایرانی وزارتِ دفاع کی کار بیٹری کی فیکٹری کے گودام میں لگی آگ پر قابو پا لیا گیا ہے۔

آگ آدھی رات کے قریب تہران کے شمال میں واقع فیکٹری میں پلاسٹک کی اشیاء کے 2 مربع کلومیٹر (تقریبا 500 ایکڑ) پر محیط گودام میں لگی۔ ٹی وی فوٹیج میں رات کے وقت آسمان میں دھوئیں کے سیاہ بادل اٹھتے ہوئے دکھائے گئے۔

رپورٹ میں کہا گیا کہ فائر فائٹرز بغیر کسی جانی نقصان کے آگ پر قابو پانے میں کامیاب رہے اور آتشزدگی کی وجہ کی تحقیقات جاری ہیں۔

رپورٹ میں آگ سے کسی ممکنہ نقصان کا ذکر نہیں کیا گیا۔ ایران کی وزارتِ دفاع طویل عرصے سے ایران میں کار بیٹریوں کی سب سے بڑی اور پرانی فیکٹریوں کی مالک ہے۔

حالیہ برسوں میں ملک کی دفاعی صنعت کے مقامات پر حادثات میں اضافہ ہوا ہے اور ایران نے اسرائیل پر حملوں یا تخریب کاری کا الزام عائد کیا ہے۔

اگست میں ایران نے الزام لگایا کہ اسرائیل اس کے بیلسٹک میزائل پروگرام کو ناقص غیر ملکی پرزہ جات کے ذریعے سبوتاژ کرنے کی کوشش کر رہا ہے جو پھٹ سکتے ہیں اور اس کی وجہ سے استعمال سے پہلے ہی ہتھیاروں کو نقصان پہنچ سکتا یا وہ تباہ ہو سکتے ہیں۔

2022 میں تہران کے مشرق میں پارچین نامی فوجی اور ہتھیار ساز اڈے پر ہونے والے دھماکے میں ایک انجینئر ہلاک اور دوسرا زخمی ہو گیا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں