فلسطین اسرائیل تنازع

غزہ میں شہریوں کو نشانہ بنانا گھناؤنا جرم اور وحشیانہ حملہ ہے: سعودی ولی عہد

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی پریس ایجنسی’ایس پی اے‘ کے مطابق بدھ کے روز سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان نے زور دے کر کہا ہے کہ غزہ میں شہریوں کو نشانہ بنانا ایک گھناؤنا جرم اور ایک وحشیانہ حملہ ہے۔

"غزہ میں کشیدگی پر تبادلہ خیال"

خبر رساں ایجنسی نے رپورٹ کیا کہ جاپانی وزیراعظم فوکو کشیدا نے سعودی ولی عہد سے فون پر بات کی۔ انہوں نے فون پربات کرتے ہوئے غزہ میں جاری فوجی کشیدگی پر تبادلہ خیال کیا"۔

خبر رساں ایجنسی نے مزید کہا کہ شہزادہ محمد بن سلمان نےزور دے کر کہا کہ مملکت سعودی عرب غزہ میں شہریوں کو نشانہ بنانے کو ایک گھناؤنا جرم اور وحشیانہ حملہ سمجھتی ہے۔ انہیں تحفظ فراہم کرنے کے لیے کام کرنے کی ضرورت پر زور دیا۔

"سنگین اثرات سے بچیں"

انہوں نے خطے اور دنیا میں سلامتی، امن اور استحکام پر اس جنگ کے خطرناک اثرات سے بچنے کے لیے فوجی کارروائیوں کو روکنے اور کشیدگی کو کم کرنے کی کوششوں کو مضبوط کرنے کی اہمیت پر بھی زور دیا۔

اسی تناظر میں شہزادہ محمد بن سلمان سے کو یونانی وزیراعظم نے فون پر بات کی۔ انہوں نے بھی غزہ کی پٹی میں جاری فوجی کشیدگی پر تبادلہ خیال کیا۔

ایس پی اے کے مطابق فون کے دوران ولی عہد نے کشیدگی کی رفتار کو کم کرنے اور اس بات کو یقینی بنانے کے لیے ہر ممکن کوشش کرنے کی ضرورت پر زور دیا۔

قابل ذکر ہے کہ غزہ کی پٹی میں ہسپتالوں میں ادویات اور طبی سامان کی کمی کے باعث ہلاکتوں کی تعداد 3000 سے زیادہ ہو گئی ہے اور ہزاروں زخمی ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں