ایران میں سویڈش شہری کو پھانسی کا واضح خطرہ ہے: اقوام متحدہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

اقوام متحدہ نے خبردار کیا ہے کہ سویڈش شہری کو ایران میں پھانسی کا خطرہ ہے۔ ہفتہ کے روز اقوام متحدہ کے انسانی حقوق کے دفتر نے کہا کہ سویڈش عدالت کی جانب سے ایرانی جیل کے سابق اہلکار کی سزا کو برقرار رکھنے کے بعد سویڈش شہری کی پھانسی جلد ہونے کا امکان ہوا ہے۔

اقوام متحدہ کے انسانی حقوق کے دفتر نے ٹویٹر اکاؤنٹ پر ٹویٹ میں لکھا کہ ڈاکٹر احمد رضا جلالی کو 'خدا کے خلاف دشمنی' کے الزام میں پھانسی کی سزا دی جا رہی ہے۔

واضح رہے 2017 میں ڈاکٹر جلالی کو جاسوسی کے الزام میں موت کی سزا سنائی گئی تھی لیکن ان کے حامیوں نے اس سزا کو بےبنیاد قرار دے دیا تھا۔ ڈاکٹر جلالی اپریل 2016 میں ایران سے گرفتار ہوئے تھے۔ اس وقت وہ بیلجیم کی یونی ورسٹی میں وزیٹنگ پروفیسر کے طور پر کام کر ہے تھے۔

سویڈن کی وزارت خارجہ نے کہا کہ ڈاکٹر احمد رضا جلالی کو جس وقت گرفتار کیا گیا تھا اس وقت ان کی صحت کو سنگین خطرات تھے۔

ایمنسٹی انٹرنیشنل نے جمعہ کے روز خبردار کیا کہ ڈاکٹر جلالی کو انتقام کی وجہ سے پھانسی دی جا رہی ہے۔ کیونکہ نوری کی عمر قید کی سزا میں توثیق کی گئی تھی۔

واضح رہے 62 سالہ نوری کو بین الاقوامی انسانی قانون کی سنگین خلاف ورزیوں اور قتل کے الزام میں سزا سنائی گئی تھی کہ ایران میں 5 ہزار قیدی مارے گئے تھے۔

مقبول خبریں اہم خبریں