اسرائیلی فوج کے ترجمان اویچائی ادرائی پر قاتلانہ حملے کا انکشاف

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اسرائیلی فوج کے عربی زبان کے ترجمان اویچائی ادرائی کے قاتلانہ حملے میں بال بال بچ جانے کا انکشاف کیا گیا ہے۔ صہیونی فوج کے ترجمان پر ایک ماہ قبل چاقو سے وار کیا گیا تھا۔ اسرائیلی آرمی ریڈیو نے بدھ کی شام اطلاع دی کہ ایک ماہ قبل اسرائیلی علاقے "رعنانا" میں چاقو سے حملے کی کارروائی میں اسرائیلی فوج کے ترجمان کو مارنے کی کوشش کی گئی تھی۔

ریڈیو نے یہ بھی بتایا کہ الخلیل شہر سے تعلق رکھنے والے فلسطینی قیدی احمد زیدات، جس نے ایک ماہ قبل رعنانا میں رن اوور حملہ کیا تھا وہ اسرائیلی فوج کے عربی زبان کے ترجمان کو قتل کرنے کا ارادہ رکھتا تھا۔ ادرائی قریبی ریسٹورنٹ میں تھے۔ یادرہے 15 جنوری کو وسطی اسرائیل کے شہر رعنانا میں دوہرے رن اوور اور چاقو سے حملے کے بعد ایک اسرائیلی خاتون ہلاک اور کم از کم 20 زخمی ہو گئے تھے۔ زخمیوں میں سے بعض کی حالت نازک اور خطرناک بتائی گئی تھی۔

اسرائیلی پولیس نے جنوبی مغربی کنارے میں الخلیل شہر کے علاقے بنی نعیم کے قریب سے دو افراد کو ملا کر کل تین 3 فلسطینیوں کو گرفتار کر لیا تھا۔ اسرائیلی اخبار یدیوتھ احرونوت نے کہا تھا کہ مجرموں میں سے ایک نے ایک خاتون کو چاقو مارا اور اس کی گاڑی پر قبضہ کر لیا۔ یہ حملے غزہ کی پٹی پر اسرائیلی جنگ کے تسلسل کے درمیان ہوئے ہیں۔ سات اکتوبر سے شروع اس جنگ کے نتیجے میں 29313 فلسطینی شہید اور 69333 زخمی ہوگئے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں