حزب اللہ کے خلاف مہم وسیع کریں گے، ہر جگہ تنظیم کا تعاقب کیا جائے گا: اسرائیل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

اسرائیلی وزیر دفاع یوآو گیلنٹ نے انکشاف کیا ہے کہ اسرائیل لبنانی حزب اللہ کے خلاف مہم کو وسعت دے گا اور ہر جگہ اس کا تعاقب کرے گا۔ شمالی محاذ پر صورتحال کا جائزہ لینے کے بعد گیلنٹ نے جمعہ کے روز شام میں اپنے فضائی حملوں کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ فوج شمال میں حملوں کی رفتار میں اضافہ کرے گی۔

ٹائمز آف اسرائیل اخبار کے مطابق انہوں نے مزید کہا کہ اسرائیل حزب اللہ کے خلاف دفاع سے ہٹ کر اب اس کا تعاقب کر رہا ہے۔ بیروت، دمشق اور اس سے آگے جہاں کہیں بھی وہ کام کریں گے، ہم وہاں پہنچ جائیں گے۔

اسرائیلی فوج نے جمعہ کو اعلان کیا تھا کہ جنوبی لبنان میں اسرائیلی فوج کے کار پرحملے میں حزب اللہ کا ایک عہدیدار مارا گیا ہے۔ یہ حملہ بزوریا میں کیا گیا جس میں حزب اللہ کے راکٹ اور میزائل یونٹ کے ڈپٹی کمانڈر علی عبد الحسن نعیم جاں بحق ہوگئے۔ اسرائیلی فوج نے کا نعیم میزائل کے شعبے میں ایک کمانڈر اور بھاری وار ہیڈز کے ساتھ میزائل فائر کرنے کے کمانڈروں میں سے ایک تھا اور اسرائیل کے خلاف حملوں کی منصوبہ بندی اور ان کے آغاز کا ذمہ دار تھا۔

شام میں حملے

سیرین آبزرویٹری فار ہیومن رائٹس کے مطابق اسرائیل نے جمعہ کو صبح سویرے شام کے حلب کے ہوائی اڈے کے قریب ہتھیاروں کے ڈپو پر بھی حملہ کیا۔ اس حملے میں حزب اللہ کے 7 ارکان اور شامی فورسز کے 36 اہلکار اور ایران کے وفادار دھڑے کے ایک رکن سمیت 44 افراد جاں بحق ہوگئے۔ العربیہ کے نمائندے نے حزب اللہ کے رہنما کے قتل کی تصدیق کی ہے۔

یومیہ کارروائیاں

واضح رہے سات اکتوبر سے غزہ میں شروع ہونے کے بعد سے اسرائیل اور لبنان کی درمیانی سرحد پر بھی روزانہ کی بنیاد پر فائرنگ، راکٹ باری اور ڈرون اٹیکس کا تبادلہ ہو رہا ہے۔ اسرائیل نے حملے کرکے لبنان میں 347 افراد کو جاں بحق کردیا ہے۔ مرنیوالوں میں 68 عام شہری بھی شامل ہیں۔ لبنان سے حزب اللہ کے حملوں سے اسرائیل میں 10 فوجی اور 8 عام شہری ہلاک ہو چکے ہیں۔

اسرائیل اور لبنان  کا سرحدی علاقہ
اسرائیل اور لبنان کا سرحدی علاقہ

ہفتوں سے اسرائیل نے لبنانی سرزمین کے اندر بھی گہرے فضائی حملے شروع کردیے ہیں۔ ان حملوں میں حزب اللہ کے ٹھکانوں کو نشانہ بنایا گیا ہے۔ اسی کی وجہ سے کھلی جنگ چھڑنے کے مقامی اور بین الاقوامی خدشات میں اضافہ ہوا ہے۔ اسرائیل نے حزب اللہ اور حماس دونوں کے رہنماؤں کو قتل کرنے کے منصوبے کے تحت جنوبی لبنان میں کاروں پر بھی کئی حملے بھی کیے ہیں۔ غزہ جنگ شروع ہونے کے بعد سے حزب اللہ یا ایرانی حمایت یافتہ ملیشیاؤں کے شام میں ٹھکانوں پر بھی اسرائیلی حملے بڑھ گئے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں