فلسطین اسرائیل تنازع

سلامتی کونسل میں غزہ جنگ بندی اور اس کی مانیٹرنگ کے لیے فرانس کی قرارداد کا مسودہ پیش

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

فرانس نے پیر کے روز اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل مین ایک ایسی قرارداد کا مسودہ پیش کیا ہے جس مقصد غزہ میں جنگ بندی کو مانیٹر کرنے کا نظام وضع کرنا اور فلسطینی اتھارٹی کو غزہ میں بھی ذمہ داریاں سنبھالنے کی تجاویز سامنے لانا ہے۔

تاہم اس کے ساتھ ہی خود فرانس کے سفیر نکولس ڈی رائیویرے نے یہ بھی کہہ دیا ہے کہ یہ ایک ایسا منصوبہ ہے جسے کامیاب بنانے کے لیے کافی وقت چاہیے ہو گا۔ سفیر کے مطابق اس قرار داد کو سلامتی کونسل کے نو ووٹ درکار ہوں گے نیز مستقل ممبران امریکہ، روس ، چین اور برطانیہ کی طرف سے مخالفت کا نہ کیا جانا شامل ہو گا۔

فرانس کی طرف سے پیش کیا گیا یہ مسودہ خبر رساں ادارے' رائٹرز کی نظر سے بھی گذرا ہے۔ اس میں غزہ میں فوری جنگ بندی کے لیے کہا گیا ہے اور اسرائیلی یرغمالیوں کی غیر مشروط رہائی کا مطالبہ کیا گیا ہے۔

واضح رہے اسرائیل کے سب سے بڑے اتحادی امریکہ نے 25 مارچ کو پہلی بار جنگ بندی کے حق میں ایک قرار داد کو ویٹو نہیں کیا تھا۔ تاکہ مسلمان کے مقدس مہینے رمضان میں خونریزی بند ہو اور فلسطینی عوام روزے بھی رکھ سکیں۔ اب یہ رمضان اگلے ہفتے کو مکمل ہونے جا رہا ہے۔ مگر اس منظور کردہ اکلوتی جنگ بندی قرار داد پر عمل نہیں کریا گیا ہے۔

اگرچہ واضح رہے غزہ میں جنگ بندی کے لیے عالمی رائے عامہ کے متٓحرک ہونے کے ساتھ ساتھ مشرق وسطیٰ کے اس دیرینہ تنازعے کے دو ریاستی حل کے حق میں بھی حمایت بڑھ رہی ہے اور فلسطینیوں کی ایک آزاد ریاست کی بات کی جاری ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں