اسرائیل کا وزارت انصاف کی ویب سائٹ پر سائبر حملے کی تحقیقات کا اعلان

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اسرائیلی وزارت انصاف نے کہا ہے کہ وہ ایک "سائبر واقعے" کی تحقیقات کر رہی ہے جو جمعہ کے روز پیش آیا جب غزہ میں جنگ کے خلاف احتجاج کرنے والے کارکنوں نے اعلان کیا کہ انہوں نے وزارت انصاف کے سرورز کو ہیک کر لیا ہے اور سیکڑوں گیگا بائٹس کا ڈیٹا حاصل کر لیا ہے۔

وزارت انصاف نے ’ایکس‘ پلیٹ فارم پر کہا کہ "صبح کے اوقات سے وزارت انصاف اور دیگر فریقین کے ماہرین حادثے اور اس کے نتائج کی تحقیقات کر رہے ہیں"۔

انہوں نے مزید کہا کہ "مواد کا دائرہ کار ابھی بھی زیرِ جائزہ ہے اور لیک ہونے والی دستاویزات کے مواد اور حجم اور ان کے ذرائع کا جائزہ لینے میں کچھ وقت لگے گا"۔

خود کو "انانیمس فار جسٹس" کہنے والے ایک گروپ نے اس ہیکنگ کی ذمہ داری قبول کرتے ہوئےکہا ہے کہ تقریباً 300 گیگا بائٹس کے ڈیٹا کی بازیافت بھی شامل ہے۔ گروپ نے اپنی ویب سائٹ پر کہا ہے کہ وہ غزہ میں جنگ بند ہونے تک اسرائیل پر حملے جاری رکھے گا"۔

گروپ نے وہ فائلیں شائع کیں جو اس نے کہا کہ اسے ہیکنگ آپریشن کے دوران حاصل ہوئی۔ ان میں قانونی دستاویزات، دو طرفہ معاہدوں کے مسودے اور خفیہ معاہدے شامل تھے۔

وزارت انصاف نے مراسلہ میں کہا کہ اس نے ایسے منظر نامے کے لیے پیشگی تیاری کر رکھی تھی اور اس حملے کی وجہ سے اس کا کام نہیں رکا تھا۔

اسرائیل میں نیشنل سائبر سکیورٹی ایجنسی نے اس ہفتے کے شروع میں کہا تھا کہ وہ اگلے ہفتے کے شروع میں ایران میں "یروشلم ڈے" کے موقع پر سائبر حملوں کی کوششوں میں اضافے کی توقع کرتا ہے۔

اس سال یوم القدس غزہ پر اسرائیلی حملے کے درمیان آیا ہے۔ اسرائیلی فورسز نے غزہ پر چھ ماہ سے جاری بمباری کے دوران 33,000 سے زائد فلسطینیوں کو ہلاک اور کم از کم 75,000 دیگر کو زخمی کیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں