بلنکن کا جنگ بندی کی تجویز پرسعودی، ترکیہ ،اردن کے وزرائے خارجہ سے تبادلہ خیال

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

امریکی دفترخارجہ کے مطابق وزیر خارجہ انٹونی بلنکن نے سعودی عرب، ترکیہ اور اردن کے وزرائے خارجہ کے ساتھ غزہ میں فوری جنگ بندی اور یرغمالیوں کی رہائی کی تجویز پر فون پر تبادلہ خیال کیا ہے۔

امریکی محکمہ خارجہ کے ترجمان میتھیو ملرنے کہا کہ بلنکن جنہوں نے پراگ سے واشنگٹن واپسی کے دوران طیارے میں بیٹھ کر فون کیا نے اپنے ہم منصبوں کو یقین دلایا کہ یہ تجویز اسرائیلیوں اور فلسطینی دونوں کے مفاد میں ہے۔

جمعے کے روز امریکی صدر جو بائیڈن نے تین مرحلوں پر مشتمل "اسرائیلی تجویز" کا اعلان کیا جو غزہ میں جنگ کے خاتمے کے لیے ایک روڈ میپ تشکیل دے گی۔ جس میں تمام فریقین سے مطالبہ کیا گیا کہ وہ کسی ایسے معاہدے تک پہنچنے کا موقع ضائع نہ کریں جو آٹھ ماہ سے جاری جنگ کو روکنے کا باعث بنے۔

مشرق وسطیٰ کی صورتحال کے حوالے سے وائٹ ہاؤس میں اپنے ایک خطاب میں بائیڈن نے کہا کہ اسرائیل نے غزہ میں پائیدار جنگ بندی اور تین مرحلوں میں یرغمالیوں کی رہائی کی تجویز پیش کی ہے۔امریکہ نے یہ تجویز قطر کےذریعے حماس کو بھیجی ہے۔

دوسری طرف اسرائیلی وزیر اعظم بنجمن نیتن یاہو کے دفتر نے کہا کہ حکومت یرغمالیوں کی جلد از جلد واپسی کی خواہاں ہے اور وہ اس مقصد کے حصول کے لیے کام کر رہی ہے۔

’الحرہ‘ کے نامہ نگار نے اطلاع دی ہے کہ نیتن یاہو کے دفتر نے کہا کہ اسرائیلی وزیر اعظم نے مذاکراتی ٹیم کو اس مقصد کے حصول کے لیے وسیع خاکہ پیش کرنے کی ذمہ داری سونپی ہے۔ انہوں نے اس بات پرزور دیا کہ جنگ اس وقت تک نہیں ہوگی جب تک اس کے تمام اہداف حاصل نہیں ہو جاتے۔ تمام یرغمالیوں کی رہائی، حماس کے عسکری ونگ کو مکمل طور پر ختم کرنا اور حماس کی طاقت کو کچلنا ان کے اہداف ہیں۔

نیتن یاہو کے دفتر نے مزید کہا کہ "اسرائیل کی طرف سے تجویز کردہ قطعی خاکہ بشمول ایک مرحلے سے دوسرے مرحلے میں مشروط منتقلی، اسرائیل کو اپنے اہداف کے حصول کے لیے کام کرنے سے نہیں روکتی۔

نیتن یاہو کے دفتر نے واضح نہیں کیا کہ آیا ان کی تجویز وہی تجویز تھی جو بائیڈن نے اپنی تقریر میں بیان کی تھی۔

دوسری طرف حماس نے جمعے کے روز ایک بیان میں کہا کہ وہ غزہ کی پٹی میں مستقل جنگ بندی کے لیے امریکی صدر جو بائیڈن کی اعلان کردہ تجویز کو مثبت طور پر دیکھتی ہے۔

حماس نے مزید کہا کہ "تحریک مستقل جنگ بندی، غزہ کی پٹی سے مکمل انخلا، تعمیر نو، بے گھر افراد کی ان کے گھروں کو واپسی، قیدیوں کے تبادلے کے ایک باوقار اور سنجیدہ پروگرام کی تکمیل پر مبنی کسی بھی تجویز پر مثبت اور تعمیری بات چیت کےلیے تیار ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں