اردن کی سعودی عرب کی سرحد کے ساتھ لاکھوں نشہ آور گولیوں کی ضبطی

گاڑیوں میں چھپائی گئی منشیات کی دریافت کئی برسوں میں سب سے بڑی ضبطی ہے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اردن نے سعودی عرب کے قریب ایک سرحدی چوکی کے ذریعے کیپٹاگون کی لاکھوں نشہ آور گولیاں سمگل کرنے کی دو کوششیں ناکام بنا دیں جو برسوں میں جنوبی شام میں سرگرم ایران سے وابستہ گروہوں کی سمگل کردہ منشیات کی سب سے بڑی ضبطی ہے۔

حکام نے بدھ کے روز روئٹرز کو بتایا کہ العمری راہداری پر تعمیراتی کام کی گاڑیوں میں چھپائی گئی منشیات دریافت ہوئی۔

قانون نافذ کرنے والے حکام نے ہفتوں سے دو الگ الگ کارروائیوں کا سراغ لگایا تھا جن میں اردن کی شام کے ساتھ شمالی سرحد سے منشیات کی بڑی تعداد لائی گئی لیکن منشیات ضبطی کی سابقہ کارروائیوں کے برعکس حکام نے یہ کارروائی سعودی سرحد پر کی۔

مغربی انسدادِ منشیات حکام نے کہا ہے کہ جنگ سے تباہ شدہ شام ایمفیٹامین قسم کی نشہ آور شے کی بڑے پیمانے پر پیداوار کے لیے خطے کا مرکزی مقام بن گیا ہے۔ یہ کیپٹاگون کے نام سے معروف ہے۔

اپنے مغربی اتحادیوں کی طرح اردنی حکام کہتے ہیں کہ اربوں ڈالر کی منشیات اور ہتھیاروں کی تجارت میں اضافے کا محرک لبنان کا ایرانی حمایت یافتہ حزب اللہ گروپ اور ایران نواز ملیشیا ہیں جو جنوبی شام کے زیادہ تر حصے پر قابض ہیں۔ ایران اور حزب اللہ ان الزامات کی تردید کرتے ہیں۔

اقوامِ متحدہ کے ماہرین اور امریکی و یورپی حکام کہتے ہیں کہ شام میں ایک عشرے سے زائد عرصے سے جاری تنازعے کی وجہ سے ایران نواز ملیشیا اور حکومت نواز نیم فوجی دستوں کا جو پھیلاؤ ہوا ہے، منشیات کی غیر قانونی تجارت اسے مالی امداد فراہم کرتی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں