.

بہاول پور: سوشل میڈیا پر توہینِ صحابہ کے مجرم کو سزائے موت کا حکم

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

پاکستان کے سب سے بڑے صوبہ پنجاب میں انسداد دہشت گردی کی ایک عدالت (اے ٹی سی ) نے سوشل میڈیا پر اسلام ، صحابہ کرام رضوان اللہ علیہم اجمعین اور امہات المومنین رضی اللہ عنہن کی توہین پر مبنی مواد پوسٹ کرنے کے جرم میں ایک شخص کو سزائے موت کا حکم دیا ہے۔

ایک سرکاری پراسیکیوٹر کے مطابق پنجاب کے جنوبی شہر بہا ول پور میں انسداد دہشت گردی کی عدالت کے جج شبیر احمد نے تیس سالہ ملزم کو قصور وار قرار دے کر پھانسی کی کڑی سزا سنائی ہے۔سزایافتہ مجرم کا تعلق شیعہ کمیونٹی ہے۔

محکمہ انسداد دہشت گردی ( سی ٹی ڈی) پنجاب نے گذشتہ سال ملزم کو بہاول پور سے گرفتار کیا تھا اور اس کے خلاف سی ٹی ڈی پولیس اسٹیشن ملتان میں اسلام کی برگزیدہ شخصیات کی توہین کے الزام میں مقدمہ درج کیا گیا تھا۔

مجرم کا تعلق لاہور سے بتایا جاتا ہے اور اس نے فیس بُک پر صحابہ کرام رضوان اللہ اجمعین اور ازواجِ مطہرات رضی اللہ عنہن کی شان کے خلاف توہین آمیز مواد پوسٹ کیا تھا۔

واضح رہے کہ پاکستان میں اب تک کسی سائبر جرم میں ماخوذ کسی مجرم کو یہ سب سے کڑی سزا سنائی گئی ہے۔اس سے قبل سائبر کرائم کے مجرموں کو عمر قید یا لمبی قید کی سزائیں تو سنائی جاتی رہی ہیں لیکن کسی مجرم کو سزائے موت پہلی مرتبہ سنائی گئی ہے۔