کے ایس ریلیف کے زیراہتمام سیلاب سے متاثرہ ضلع بہاول نگر میں 85 ٹن خوراک کی تقسیم

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

سعودی عرب کے شاہ سلمان انسانی امداد اور ریلیف مرکز (کے ایس ریلیف) نے اتوار کے روز پاکستان کے سیلاب سے متاثرہ ضلع بہاول نگر میں سب سے پسماندہ طبقات میں 85 ٹن خوراک کی ٹوکریاں تقسیم کی ہیں۔

پاکستان کے جنوب مشرقی اضلاع دریائے ستلج میں سیلاب آنے سے متاثر ہوئے تھے۔17 اگست کو پڑوسی ملک بھارت نے شدید بارشوں کے بعد دریائے ستلج میں سیلابی پانی چھوڑدیا تھا۔اس کے نتیجے میں سیلاب سے اگست کے دوران میں بہاول نگر سمیت جنوب مشرقی اضلاع میں ہزاروں افراد بے گھر ہوگئے تھے۔

کے ایس ریلیف اپنے تحفظِ خوراک کے منصوبے کے حصے کے طور پر پاکستان میں سیلاب سے متاثرہ عوام کو امدادی سامان مہیّا کر رہا ہے۔قبل ازیں گذشتہ بدھ کو سعودی امدادی ادارے نے اعلان کیا تھا کہ اس نے پاکستان کے شمال مغربی اضلاع چترال اور دیر میں لوگوں میں غذائی اجناس کے12,000 پیکجز تقسیم کیے ہیں۔یہ دنوں اضلاع اس سال جولائی میں سیلاب سے متاثر ہوئے تھے۔

سرکاری خبر رساں ادارے ایسوسی ایٹڈ پریس آف پاکستان (اے پی پی) کی ایک رپورٹ کے مطابق کے ایس ریلیف نے اتوار کے روز سیلاب سے متاثرہ ضلع بہاول نگر میں 85 ٹن اور 500 کلوگرام خوراک کی ٹوکریاں تقسیم کی ہیں۔اس امداد سے 2023-2024 کے لیے پاکستان میں غذائی تحفظ کے منصوبے کے دوسرے مرحلے میں 6,300 افراد مستفید ہوئے ہیں۔

کے ایس ریلیف دوسرے مرحلے کے دوران میں اگست سے ستمبر 2023 تک خوراک کی 32 ہزار 400 ٹوکریاں تقسیم کرے گا۔اس منصوبے کا ہدف چار مراحل میں ایک لاکھ پانچ ہزار ٹوکریاں تقسیم کرنا ہے۔اس منصوبے سے پاکستان کے صوبہ سندھ، بلوچستان، خیبر پختونخوا، گلگت، بلتستان اور پنجاب کے 37 اضلاع میں سب سے کمزور گروہوں سے تعلق رکھنے والے 735،000 افراد مستفید ہوں گے۔

یہ امداد سعودی عرب کی جانب سے پاکستان میں غذائی تحفظ کو بہتر بنانے کے لیے کے ایس ریلیف کے ذریعے زیرِعمل منصوبوں کا حصہ ہے۔

واضح رہے کہ کے ایس ریلیف، دنیا بھر میں امدادی ایجنسیوں میں انسانی امداد کے لیے سب سے زیادہ بجٹ رکھتا ہے اور اس وقت 88 ممالک میں انسانی ہمدردی کے منصوبوں پر کام کر رہا ہے. پاکستان اس ادارے کی امداد اور انسانی ہمدردی کی سرگرمیوں سے مستفید ہونے والا پانچواں بڑا ملک ہے۔

کے ایس ریلیف کے اعداد و شمار کے مطابق ادارے نے پاکستان میں تعلیم، حفظانِ صحت ، صاف پانی کی دستیابی، صفائی ستھرائی، ہنگامی کیمپوں اور کمیونٹی سپورٹ کے 185 منصوبے مکمل کیے ہیں۔ان منصوبوں پر گذشتہ 17 سال میں مجموعی طور پر قریباً 17کروڑ 30 لاکھ ڈالر لاگت آئی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں