پاکستان کےخیبرپختونخوا اوربلوچستان میں کے ایس ریلیف کی سرمائی امدادکی تقسیم کا اختتام

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

سعودی امدادی ایجنسی نے جمعرات کو کہا کہ شاہ سلمان انسانی امدادی مرکز (کے ایس ریلیف) نے پاکستان میں سرمائی امداد کی تقسیم مکمل کر لی ہے جس نے شمال مغربی خیبر پختونخواہ اور جنوب مغربی بلوچستان کے لوگوں کو 19,000 امدادی پیکج فراہم کیے ہیں۔

گذشتہ سال مون سون کی غیر معمولی بارشوں کی وجہ سے آنے والے سیلاب سے متأثرہ طبقات کی اہم ضروریات کے جواب میں سعودی امدادی ایجنسی نے پاکستان کے سرد ترین علاقوں میں لوگوں کو ریلیف فراہم کرنے کا اقدام اٹھایا۔

ایجنسی نے ایک بیان میں کہا، "صوبائی حکومتوں اور بطورِ عمل درآمد پارٹنر حیات فاؤنڈیشن کے ساتھ مل کر تقسیم کا عمل انتہائی شفافیت کے ساتھ ہوا اور اس بات کو یقینی بنایا گیا کہ امداد ان تک پہنچے جنہیں اس کی سب سے زیادہ ضرورت ہے۔"

"مجموعی طور پر کے ایس ریلیف کی طرف سے فراہم کردہ سرمائی امدادی پیکجوں سے خیبر پختونخوا اور بلوچستان کے صوبوں میں 133,000 سے زیادہ افراد مستفید ہوئے۔"

امداد کی تقسیم کے منصوبے کے ایک حصے میں خیبر پختونخوا کے پانچ اضلاع بشمول بالائی چترال، زیریں چترال، بالائی دیر، بالائی سوات اور بالائی کوہستان میں 11,000 سرمائی امدادی پیکجز تقسیم کیے گئے۔ مزید برآں بلوچستان کے چار اضلاع قلات، سہراب، قلعہ سیف اللہ اور زیارت میں 8000 پیکجز تقسیم کیے گئے۔

ان پیکجوں میں مردوں اور عورتوں دونوں کے لیے دو لحاف اور گرم چادریں اور بچوں اور بڑوں کے لیے گرم ملبوسات شامل تھے۔

امدادی ایجنسی نے کہا کہ اس کوشش کا مقصد سیلاب متأثرین کی تکالیف کو کم کرنا اور مستحق افراد کو اشد ضرورت میں مدد فراہم کرنا تھا۔

سعودی تنظیم کے پاس دنیا بھر میں کسی بھی امدادی ایجنسی کے لیے دستیاب سب سے بڑے انسانی بجٹ میں سے ایک ہے۔ اس بجٹ سے ایجنسی کے عہدیدار 80 سے زیادہ ممالک میں وسیع اقسام کے منصوبے شروع کر سکتے ہیں۔

پاکستان ایجنسی کی امداد اور انسانی ہمدردی کی سرگرمیوں کا پانچواں بڑا استفادہ کنندہ ہے اور اس نے گذشتہ سال کے مون سون سیلاب کے بعد سے اس کی امداد سے بہت فائدہ اٹھایا ہے۔ اس سیلاب میں 1,700 سے زیادہ افراد ہلاک ہوئے اور فصلوں اور عوامی بنیادی ڈھانچے کو بڑے پیمانے پر نقصان پہنچا۔

کے ایس ریلیف نے پاکستان میں تعلیم، صحت کی نگہداشت، پانی، صحت و صفائی، حفظانِ صحت اور کمیونٹی کی امداد سے متعلق 170 منصوبے مکمل کیے ہیں اور 2015 میں ایجنسی کے قیام کے بعد سے مجموعی طور پر ان منصوبوں پر تقریباً 163 ملین ڈالر لاگت آئی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں