گوادر میں فوج کی بم ڈسپوزل ٹیم پر حملہ، دو اہل کار جاں بحق

پاکستان میں رواں برس کی پہلی سہ ماہی میں اس طرح کے پر تشدد واقعات میں 432 افراد ہلاک ہو چکے ہیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

پاکستان میں حکام کا کہنا ہے کہ صوبہ بلوچستان کے ضلع گوادر کے انقرہ ڈیم کے علاقے میں پاکستانی فوج کے بم ڈسپوزل اسکواڈ پر حملہ ہوا، جس میں دو سکیورٹی اہلکار ہلاک اور چار دیگر زخمی ہو گئے۔

پولیس کے ایک بیان کے مطابق بم ناکارہ بنانے والی پاکستانی فوج کی ٹیم پر اتوار کے روز اس وقت نامعلوم افراد نے اندھا دھند فائرنگ کی، جب وہ انقرہ ڈیم کے علاقے میں بارودی سرنگیں صاف کرنے کے کام میں مصروف تھی۔ گولیاں لگنے سے دو فوجی موقع پر ہی ہلاک ہو گئے، جبکہ چار شدید طور پر زخمی ہو گئے۔

گوادر کے ڈپٹی کمشنر اورنگزیب بادینی کے مطابق: ''فائرنگ کا واقعہ بندرگاہی شہر (گوادر) سے تقریباً 25 کلومیٹر کے فاصلے پر پیش آیا، جس میں دو افراد ہلاک اور چار زخمی ہو گئے۔'' ان کا مزید کہنا تھا کہ واقعے کے بعد لاشوں اور زخمیوں کو جی ڈی اے ہسپتال منتقل کر دیا گیا۔‘

واقعے میں جاں بحق ہونے والوں کی شناخت سپاہی ظہور اور الطاف کے نام سے کی گئی ہے، جبکہ زخمیوں میں حوالدار ساجد حسین، سپاہی تجمل حسین، سپاہی ابرار احمد اور سپاہی گل حیدر شامل ہیں۔

واضح رہے کہ گذشتہ بیس مارچ کو بھی گوادر میں ایک سرکاری عمارت پر شدت پسندوں نے دھاوا بول دیا تھا، جسے سکیورٹی فورسز نے اپنی کارروائی سے ناکام بنا دیا تھا۔ اس تصادم میں آٹھ مسلح دہشت گرد ہلاک ہوئے تھے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں