ضیوف الرحمان کی حفاظت، پہرے داران حرم کی اولین ترجیح

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

مسجد حرام کی توسیعی منصوبے پر جنگی بنیادوں پر تعمیراتی کام اور ماہ صیام میں معتمرین کرام کی تعداد میں غیر معمولی اضافے کے باعث محافظین کعبہ کی ذمہ داریوں میں بھی خاطر خواہ اضافہ ہو جاتا ہے۔

مسجد حرام میں متعین پبلک سیکیورٹی ادارے کے اہلکار اپنی جان پر کھیل کر اللہ کے مہمانوں کے تحفظ کو یقینی بنانے کی کوشش کرتے ہیں۔ العربیہ نیوز چینل کی ماہ صیام کے حوالے سے خصوصی رپورٹ میں رش کے دنوں میں مسجد حرام کے پہرے داروں کی ان تھک مساعی پر روشنی ڈالی گئی ہے۔

رپورٹ کے مطابق تعمیراتی کاموں کے تسلسل اور معتمرین کی تعداد میں غیر معمولی اضافے کے باعث سیکیورٹی اہلکاروں کی مشکلات بڑھ جاتی ہیں۔ تعمیراتی کام کے دوران ہونے والی توڑ پھوڑ سے پیدل اور سوار زائرین کو بچاتے ہوئے مناسک کی ادائی میں ان کی مدد کرنا یقینا ایک مشکل مرحلہ ہے۔

سیکیورٹی اہلکار روزے کی حالت میں معتمرین کی خدمت اور راتوں کو بھی اللہ کے مہمانوں کا تحفظ یقنیی بنانے میں جتے رہتے ہیں۔
ماہ صیام کے اختتام پر معتمرین کی تعداد میں کمی آ جاتی ہے مگر پبلک سیکیورٹی کے ادارےکے تمام اہلکار ضیوف الرحمان کی خدمت میں پھر بھی چوکس رہتے ہیں۔ وہ خود کو مشکل میں ڈالتے ہیں مگر حجاج ومعتمرین کو ہر قسم کی پریشانی سے بچانے کی پوری پوری کوشش کرتے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں