مونگ پھلی کھانے سے یہ امراض آپ پر حملہ نہیں کریں گے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اگر آپ مونگ پھلی شوق سے کھاتے ہیں یا اس کے عاشقوں میں شمار ہوتے ہیں تو یقین جانیے بہت سے جسمانی امراض آپ پر حملہ آور نہیں ہوں گے۔ ان میں سرطان ، زہائمر ، ذیابیطس اور امراض قلب اہم ترین ہیں۔ یہ بات Egyptian Society of Allergy and Immunology کے رکن ڈاکٹر مجدی بدران نے بتائی۔

"العربیہ ڈاٹ نیٹ" سے گفتگو کرتے ہوئے بدران کا کہنا تھا نئی سائنسی تحقیقی مطالعوں سے یہ بات ثابت ہوئی ہے کہ مونگ پھلی ایسے اہم اور بڑے غذائی عناصر سے بھرپور ہوتی ہے جو انسانی جسم کے مدافعتی نظام کی قوت میں اضافہ کرتے ہیں۔ یہ دل اور خون کی شریانوں کے امراض ، زہائمر اور سرطان سے بچاتی ہے اور بڑھاپے کے اثرات کو کم کرتی ہے۔

بدران کے مطابق مونگ پھلی میں 25% پروٹین ہوتے ہیں جو انسانی جسم میں خلیوں کے مجموعوں کی تجدید کرتے ہیں۔ مونگ پھلی میں متعدد غذائی عناصر پائے جاتے ہیں جن میں فولک ایسڈ ، تانبہ ، نیاسِن اور کئی وٹامن شامل ہیں۔ یہ دل اور شریانوں کا تحفظ کرتے ہیں ، نقصان دہ کولسٹرول کو کم کرتے ہیں اور جرثوموں اور زہریلے مواد سے بچاتے ہیں۔

ڈاکٹر بدران نے باور کرایا کہ مونگ پھلی کا چھلکا اینٹی آکسیڈنٹس کا حامل ہوتا ہے۔ اس کا روغن پروٹین ، اینٹی آکسیڈنٹس اور جسم کے لیے اہم معدنیاتی نمکیات سے بھرپور ہوتا ہے۔

انہوں نے مزید بتایا کہ مونگ پھلی میں ریشے کی بھی وافر مقدار پائی جاتی ہے جو وزن کم کرنے اور دمے سے تحفظ فراہم کرنے میں مددگار ہوتا ہے۔

بدران کے مطابق قدرت کا یہ انمول تحفہ اپنے اندر " ٹرپٹوفان" )ایک قِسم کا تیزاب جو لحمیات میں پایا جاتا ہے) بھی رکھتا ہے جو جسم میں سیروٹونِن مادہ پیدا کرتا ہے۔ یہ مادہ انسان کو مایوسی اور اعصابی تناؤ کی حالت سے بچا کر مزاج کو نارمل رکھتا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں