پوتین کی پر تعیش بکتر بند ٹرین میں بیوٹی سیلون اور جم بھی موجود، نئی تصاویر آگئیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

روسی صدر پوتین ٹریکنگ سے بچنے کے لیے 2021 سے زیادہ کثرت سے ٹرین کا استعمال کر رہے ہیں۔ روسی صدر کے لیے خصوصی ٹرین تیار کی گئی ہے۔ اس ٹرین کی نئی تصاویر اور تفصیلات سامنے آگئی ہیں۔ ایک حالیہ رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ پوتین کی پرتعیش ٹرین بکتر بند ہے۔ اس ٹرین میں بیوٹی سیلون اور ایک جم بھی ہے۔ ٹرین کے اندرونی ڈیزائن کو بھی تصاویر میں دکھایا گیا ہے۔

ڈوزیئر سینٹر جو کریملن سے منسلک افراد کی سرگرمیوں کا سراغ لگاتا ہے کی طرف سے جاری کردہ تصاویر دکھایا گیا کہ ٹرین میں ایک میڈیکل وارڈ بھی ہے

۔

روسی صدر پوتین کی ٹرین میں جم
روسی صدر پوتین کی ٹرین میں جم

باتھ روم میں ایک "لگژری شاور" ہے جس میں "خوشبودار جھاگ" کی ایپلی کیشن شامل ہے۔ اس شاور کی قیمت 3.75 ملین پاؤنڈ بنتی ہے۔ ٹرین میں اینٹی ایجنگ مشینیں، پھیپھڑوں کا سانس لینے والا، ایک ڈیفبریلیٹر اور ایک مریض مانیٹر ڈیوائس بھی ہے۔ اس ڈیوائس سے نبض اور درجہ حرارت کا اندازہ لگایا جاتا ہے۔

روسی صدر پوتین کی ٹرین کا پر تعیش کھانے کا ہال
روسی صدر پوتین کی ٹرین کا پر تعیش کھانے کا ہال

ٹرین کے دیگر حصوں میں ایک شاندار کھانے کی گاڑی ہے جس میں سرخ قالین، پردے اور ایک لمبی میز رکھی ہے۔ سنٹر نے اطلاع دی ہے کہ 2014 سے لے کر اب تک بکتر بند ٹرین کی دیکھ بھال کے لیے 1.45 بلین روبل یا ایک کروڑ 58 لاکھ 55 ہزار ڈالر لاگت آئی ہے۔

یوکرین میں روس کی جنگ کے دوران پوتین اس ٹرین کا زیادہ استعمال کرتے دکھائی دیتے ہیں۔ مرکز نے قبل ازیں انتظامیہ کے قریبی ایک نامعلوم ذریعے کا حوالہ دیتے ہوئے کہا تھا کہ پوتین نے 2021 سے ٹرین کا زیادہ سے زیادہ استعمال کیا ہے کیونکہ اسے طیاروں کی طرح ٹریک نہیں کیا جا سکتا۔

روسی میڈیا نے فروری 2023 میں بتایا تھا کہ پوتین کے اکثر مقامات پر خفیہ سٹیشنز اور مواصلاتی لائنیں تعمیر کی گئی ہیں جن میں 2015 میں ماسکو سے باہر نوو-اوگاریوو، 2017 میں سوچی اور 2019 میں والڈائی شامل ہیں۔

پوتین کی ٹرین میں میڈیکل روم بھی موجود ہے
پوتین کی ٹرین میں میڈیکل روم بھی موجود ہے


صحافی الیا روزڈسٹونسکی نے کہا ہے کہ پوتین کے ٹرین کے استعمال کے پیچھے ایک "نفسیاتی وجہ" ہے۔ وہ وجہ یہ ہے کہ پوٹین ٹریک کیے جانے کے امکان سے خوفزدہ ہے۔ انہیں یہ خوف رہتا ہے کہ ان کے طیارے کو ٹریک کرکے تباہ کیا جا سکتا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں