.

صدارتِ عامہ الحرمین الشریفین عازمینِ حج کی خدمت کے لیے مستعد،ضروری اشیاء کی تقسیم

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کی صدارتِ عامہ برائے امورالحرمین الشریفین مکہ مکرمہ میں عازمین حج کو مختلف خدمات مہیا کررہی ہےاوراس کی طرف سے عازمین میں کووِڈ-19 سے بچاؤ کے لیے ضروری اشیاء تقسیم کی جارہی ہیں۔

صدارت عامہ کی جانب سے ذوالحجہ کے ابتدائی دس ایام میں آبِ زم زم کی ایک لاکھ سے زیادہ بوتلیں روزانہ تقسیم کی جارہی ہیں۔اس کے ساڑھے تین سو رضاکارہمہ وقت مستعد ہیں۔انھیں حجاج میں تقسیم کرنے کے لیے 9000 سے زیادہ لِٹرآب زم زم مہیا کیا گیا ہے۔وہ اس کے ساتھ نمازظہر،عصر اور مغرب کے دوران میں کھجوروں کے پیکٹ بھی عازمین حج میں تقسیم کررہے ہیں۔

صدارت عامہ نے کووِڈ-19 سے بچاؤ اور سماجی فاصلے کی پابندی کروانے کے لیے مزید بھی انتظامات کیے ہیں اور اس مرتبہ حجاج کرام کی خدمت کے لیے حرم مکی میں روبوٹس کو استعمال کیا جارہا ہے۔روبوٹ ایک کنٹرول اور خودکار نظام سے مسجدحرام میں حجاج میں آب زم زم کی بوتلیں تقسیم کررہے ہیں۔اس کے علاوہ وہ تطہیرکا کام بھی کررہے ہیں اور ان کے ذریعے جراثیم کش محلول کا سپرے کیا جارہا ہے۔

یہ روبوٹس دس منٹ کے دورانیے میں آب زم زم کی اوسطاً 30 بوتلیں تقسیم کرسکتے ہیں۔یہ کسی انسانی مداخلت کے بغیر پانچ سے آٹھ گھنٹے تک کام کرسکتے ہیں اور 600مربع میٹر کے علاقے میں بیکٹیریا کو پھیلنے سے روکتے ہیں۔

صدارت عامہ نے اس کے علاوہ تین ہزار برقی گاڑیاں بھی حجاج کرام کے لیےمہیا کی ہیں تاکہ عازمین سماجی فاصلے کی پاسداری کریں اور کسی ایک جگہ ہجوم سے گریز کریں۔

اس ادارے نے جمعہ کو مسجدحرام میں عازمین اور ورکروں میں 12 ہزار چھتریاں تقسیم کی تھیں تاکہ انھیں نمازوں اور طواف کے دوران میں دھوپ کی تمازت سے بچایا جاسکے۔

سعودی حکومت نے اس مرتبہ بھی کرونا وائرس کی وبا کے پیش نظر صرف اپنےشہریوں اورمملکت میں مقیم تارکِ وطن مکینوں کوحج کی اجازت دی ہے اور ان میں سے طے شدہ معیارپر پورااُترنے والے 60 ہزار خوش نصیبوں کا انتخاب کیا گیا ہے۔ وہ اس وقت فریضہ حج ادا کررہے ہیں۔2020ء میں بھی کرونا وائرس کی وبا کے پیش نظر صرف 10 ہزار افراد کو فریضہ حج ادا کرنے کی اجازت دی تھی۔