.

سعودی سیکیورٹی فورس کا حاجیوں کے تحفظ کی ڈرل کا عملی مظاہرہ

چالیس ہزار اہلکاروں پر مشتمل حج و عمرہ سپیشل فورس ہر دم تیار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب میں حجاج کرام کے تحفظ کو یقینی بنانے کی ذمہ دار سیکیورٹی فورس نے پیشہ وارانہ تربیت کا عملی مظاہرہ جمعرات کے روز ایک متاثر کن ڈرل میں کیا۔ اس موقع پر سعودی وزیر داخلہ شہزادہ محمد بن نایف بھی موجود تھے۔

دوسری جانب شہزادہ محمد بن نایف نے ایک بیان میں واضح کیا کہ امسال حاجیوں کے تحفظ اور سیکیورٹی کو یقینی بنانے کے لئے پچانوے ہزار سیکیورٹی اہلکار تعینات کئے گئے ہیں۔ انہوں نے واضح کیا کہ حج سیاسی تنازعات اور مذہبی فروعی اختلافات کو ہوا دینے کا موقع نہیں ہے۔

انہوں نے گذشتہ روز اپنے بیان اعلان کیا کہ چالیس ہزار سیکیورٹی اہلکاروں پر مشتمل سپیشل حج فورس تشکیل دی گئی ہے۔ انہوں نے حاجیوں پر زور دیا کہ وہ اطمینان سے مناسک حج ادا کریں اور ایسی باتوں سے اجتناب کریں کہ جو انہیں فریضہ حج سے دور کرنے کا باعث ہوں۔

شہزادہ نایف نے مزید کہا کہ بیت اللہ کے حج کی خاطر آنے والے اللہ کے مہمانوں کی سیکیورٹی اور تحفظ ایک بڑی امانت ہے اور ہم سے تفاضہ کرتی ہے کہ اسے کما حقہ پورا کرنے کے لئے ہر ممکن کوشش کریں۔ "مملکت سعودی عرب نے ماضی قریب میں خوفناک دہشت گردی کی لہر دیکھی ہے اور مقامات مقدمہ بھی اس لہر کی زد میں آئے۔ اللہ کے فضل سے سعودی عرب نے دہشت گردی کی اس لہر پر قابو پایا اور اپنے عوام کو اس کے شر سے محفوظ رکھا۔

سعودی وزیر داخلہ نے بتایا کہ حج کے دوران تارکین وطن اور مقامی شہریوں کی نقل و حرکت کو کنڑول کرنے کے لئے الیکٹرانک گیٹس کا نظام شروع کر دیا گیا ہے۔ اس سہولت سے صرف انہیں افراد کو مقدس مقامات داخلے کی اجازت ملے گی جن کے پاس حکومت کے جاری کردہ پاس موجود ہیں۔