.

مکہ معظمہ اور مقامات مقدسہ کے مابین 58 زمین دوز راستے تیار

سرنگوں سے نقل وحرکت کے تحفظ کی یقین دہانی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کی حکومت نے حجاج ومعتمرین کرام کی مقدس مقامات تک بروقت رسائی کے لیے جہاں کشادہ سڑکیں اور ٹرین سروس کا آغاز کیا ہے وہیں ایک قدم آگے بڑھ کراس سہولت کو مزید بہتر کرتے ہوئے زمین دوز راستے بھی تیاری کئے گئے ہیں۔

مکہ مکرمہ سیکرٹریٹ کی جانب سے جاری ایک بیان میں بتایا گیا ہے کہ رواں موسم حج میں حجاج کرام کی نقل وحرکت اوران کی مقدس مقامات تک رسائی کے لیے 58 زمین دوز راستوں [سرنگوں] کو بھی استعمال کیا جائے گا۔

مکہ سیکرٹیریٹ کی جانب سے ان سرنگوں سے حجاج کی محفوظ منتقلی کو یقینی بنانے اورتیاریوں کا جائزہ لینے کے لیے ایک تکنیکی کمیٹی تشکیل دی تھی، جس نے اس امرکی تصدیق کردی ہے کہ یہ سرنگیں بھی حجاج کرام کی مقدس مقامات تک منتقلی کے لیے محفوظ راستہ ہیں۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق مکہ مکرمہ میں تعمیراتی منصوبوں کی نگرانی پر مامور سیکرٹری جنرل انجینیئر خالد بن محمد الھیج نے بتایا کہ اس وقت کم سے کم 58 سرنگیں تیار حالت میں موجود ہیں جہاں سے حجاج کرام کی مقدس مقامات تک منتقلی میں مدد لی جا سکتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ زیر زمین راستوں سے سڑکوں اور ٹرین سروس پر حجاج کرام کا دباؤ کم کرنے میں خاطر خواہ مدد ملے گی۔

سعودی عہدیدار کا کہنا تھا کہ ان سرنگوں کو حجاج کرام کی قیام گاہوں اور عبادت کے لیے مخصوص مقامات سے مربوط کیا گیا ہے۔ حجاج کرام اپنی مرضی کے مطابق اس سہولت سے فائدہ اٹھا کر کم وقت میں اپنی منزل تک پہنچ سکیں گے۔

مسٹر الھیج نے بتایا کہ مکہ معظمہ میں مجموعی طور پر 58 سرنگیں بنائی گئی ہیں۔ ان میں سے 12 پیدل چلنے والوں کے لیے مخصوص ہیں جن کی مجموعی لمبائی 35 کلومیٹر ہے۔ ان سرنگوں میں مجموعی طور پر 32 کنٹرول روم بنائے گئے ہیں۔ ارٹالیس ہزار روشنی کے بلب، 451 ایگزاسٹ فین، 36 الیکٹرک جنریٹرز اور آگ بجھانے کے لیے 38 ہائی پریشر واٹر پمپس بھی نصب ہیں۔

انہوں نے مزید بتایا کہ سرنگوں میں اوپر اور نیچے کی سمت میں پانی کے 35 بڑے ٹینک، نو کمپیوٹر سسٹم، کاربن مونو آکسائید ہارڈ ویئر کے نو سینسر، درجہ حرارت اور رطوبت جانچے والے 182 آلات اور دور تک دیکھنے اور ہوا کی آمد و اخراج کے لیے 500 آلات نصب کیے گئے ہیں۔