.

ایران کے سرکاری ٹی وی پر پابندیاں ختم کرنے کا امریکی فیصلہ

تہران نے بھی امریکی چینلوں کی نشریات بحال کردیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکی حکومت نے ایران کے ریڈیو اور ٹیلی ویژن کارپوریشن پرعائد پابندیاں ہٹانے کا فیصلہ کیا ہے۔ امریکی حکومت کے ایک سینیئرعہدیدار کا کہنا ہے کہ ان کا ملک ایران کے سرکاری ٹیلی ویژن چینل پرعائد پابندیوں کو ہٹانے کا اصولی فیصلہ کرچکا ہے۔

خبر رساں ایجنسی ایسوسی ایٹیڈ پریس کے مطابق اوباما انتظامیہ کے ایک عہدیدار نے بتایا کہ تہران اور گروپ چھ کے درمیان جوہری معاملے پر مذاکرات کا دوسرا دور کامیاب بنانے اور اعتماد سازی کے لیے ایرانی ٹیلی ویژن چینل پر پابندیاں ختم کی جا رہی ہیں۔

امریکی عہدیدار نے اپنی شناخت ظاہر نہ کرنے کی شرط پر بتایا کہ انہیں اطلاع ملی ہے کہ ایران کی جانب سے بھی امریکی ٹیلی ویژن چینلوں کی نشریات روکنے کے لیے الیکٹرانک وائبریشن سسٹم خلاء میں بھیجنا روک دیے ہیں جس کے بعد امریکا نے بھی ایرانی ٹی وی پر پابندیاں ہٹانے کا فیصلہ کیا ہے۔ امریکی عہدیدار کا کہنا تھا کہ تہران نےان کے ٹیلی ویژن چینلوں کی نشریات روکنے کی کوشش کی تو واشنگٹن بھی جوابا ایسا ہی کرے گا، چونکہ ایران نے ہمارے ٹیلی ویژن چینلوں کی نشریات بحال کرنا شروع کردی ہیں، اس لیے ہم بھی ایسا ہی کر رہے ہیں۔

خیال رہے کہ امریکا نے گذشتہ برس ایران کے سرکاری ٹیلی ویژن چینل اور اس سے متعلق کئی کمپنیوں پر پابندیاں عائد کردی تھیں۔ یہ پابندیاں اس وقت لگائی گئیں جب ایران نے "اسلامی نظام" کے خلاف مکروہ پروپیگنڈہ کرنے کے الزام میں غیر ملکی ٹیلی ویژن چینلوں کی اپنے ہاں نشریات روک دی تھیں۔