صدر اوباما کا داعش کو تباہ کرنے کا عزم

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

امریکی صدر براک اوباما نے اس عزم کا اظہار کیا ہے کہ وہ دولت اسلامی عراق وشام (داعش) کے جنگجوؤں کے خلاف اس وقت تک جنگ لڑیں گے جب تک مشرق وسطیٰ میں ایک فورس کے طور پر اس گروپ کا وجود ختم نہیں ہوجاتا ہے۔

صدر اوباما نے داعش کے جنگجوؤں کے ہاتھوں ایک اور امریکی صحافی کے بہیمانہ قتل کے ایک اور بعد یہ بیان جاری کیا ہے اور کہا ہے کہ ''امریکا ان دونوں خوب صورت نوجوانوں کے خلاف خوف ناک جرم کو بھولے گا نہیں''۔انھوں نے کہا کہ ''ہم ڈریں گے نہیں ،ان کے ہولناک جرائم نے ایک ملک کے طور پر ہمیں متحد کردیا ہے اور ایسے دہشت گردوں کے خلاف جنگ میں ہمارا عزم مزید پختہ ہوا ہے''۔

انھوں نے عراق میں داعش کے جنگجوؤں کے ٹھکانوں پر فضائی حملوں کے حوالے سے کہا کہ جب پائلٹوں کو کوئی کام کرنے کے لیے بھیجتے ہیں تو اس کا یہ مطلب ہوتا ہے کہ ہم ایک مشن پر ہیں۔ہم اپنے مقاصد میں بالکل واضح ہیں اور وہ یہ کہ ہم داعش کو تباہ کرنا چاہتے ہیں تاکہ یہ نہ صرف عراق بلکہ امریکا کے لیے بھی کوئی خطرہ نہ رہے۔

ایسٹونیا کے وزیراعظم طوماس ہینڈر نے اس موقع پر داعش کے خلاف جنگ میں صدر اوباما کے ساتھ یک جہتی کا اظہار کیا۔انھوں نے کہا کہ ''داعش ہم سب کے لیے ایک خطرہ ہے،اس ایشو پر ہم اور ہمارے اتحادی امریکا کے ساتھ ہیں''۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں