.

سعودی عرب:تنازعات کے حل کے لیے کوششیں دُگنا کرنے پر زور

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب نے عالمی برادری پر زوردیا ہے کہ وہ تنازعات کے خاتمے اور دہشت گردی سے مشترکہ طور پر نمٹنے کے لیے سنجیدہ اقدامات اور اپنی کوششوں کو دُگنا کرے تاکہ پوری دنیا کے عوام امن ،سلامتی اور استحکام کے ساتھ رہ سکیں۔

یہ بات سعودی ولی عہد شہزادہ سلمان بن عبدالعزیز کے زیر صدارت کابینہ کے ہفتہ وار اجلاس کے بعد سعودی پریس ایحنسی (ایس پی اے) کی جانب سے جاری کردہ بیان میں کہی گئی ہے۔وزیرثقافت اور اطلاعات عبدالعزیز خوجہ نے بتایا کہ وزارتی کونسل کے اجلاس میں خطے،پوری دنیا اور خاص طور پر متعدد عرب ممالک میں جاری بحرانوں کے حوالے سے متعدد رپورٹس کا جائزہ لیا گیا ہے۔

کونسل نے اسلامی ممالک میں ہلاکتوں ،تخریب کاری، دہشت گردی کی سرگرمیوں ،بغاوت اور لوگوں کے بے گھر ہونے کے حوالے سے کہا کہ یہ واقعات بہت ہی دردآمیز ہیں۔ سعودی کابینہ نے مصر کے جزیرہ نما سیناء میں دہشت گردی کے حالیہ حملوں کی مذمت کی ہے۔مصر کی حکومت اورعوام کے ساتھ دہشت گردی کے واقعات میں سکیورٹی فورسز کے اہلکاروں کی ہلاکتوں پر افسوس کا اظہار کیا ہے اور زخمیوں کی جلد صحت یابی کی دعا کی ہے۔

سعودی کابینہ نے اسرائیل کی جانب سے مقبوضہ بیت المقدس کو یہودیانے اور مسجدالاقصیٰ کو تقسیم کرنے کے منصوبے پر خبردار کیا ہے اور اس کو مسلمانوں کے لیے تیسرے متبرک مقام کے تقدس کی ننگی خلاف ورزی قرار دیا ہے۔کابینہ نے کہا کہ اسرائیل کے اقدامات عالمی قانون کے اصولوں اور اقوام متحدہ کی قراردادوں کی بھی خلاف ورزی ہے۔

اس ضمن میں کابینہ نے عرب لیگ اور اسلامی کانفرنس تنظیم ( او آئی سی) کے اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل میں مشرق وسطیٰ کی صورت حال سے متعلق بیان کی جانب بھی توجہ مبذول کرائی ہے۔اس میں اسرائیل کی جانب سے مقبوضہ بیت المقدس کی عرب اور فلسطینی شناخت کو مٹانے کے لیے اقدامات کی مذمت کی گئی ہے اور عالمی برادری پر زوردیا گیا ہے کہ وہ مشرق وسطیٰ کے اس دیرینہ تنازعے کو طے کرنے کے لیے اپنا کردار ادا کرے۔