.

لیبیا میں داعش کے تربیتی مراکز کا انکشاف: پینٹاگان

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکی فوج کے افریقا میں کمانڈر جنرل ڈیوڈ روڈیگیز نے انکشاف کیا ہے کہ شام اور عراق میں سرگرم دولت اسلامی المعروف داعش نے مشرقی لیبیا میں اپنے تربیتی مرکز قائم کر لئے ہیں۔ جنرل ڈیوڈ نے کہا اگرچہ ان کیمپوں کی زیادہ اہمیت نہیں ہے، تاہم اس کے باوجود امریکی فوج ان پر قریب سے نظر رکھے ہوئے ہے۔

صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے جنرل ڈیوڈ روڈیگیز نے کہا کہ 'داعش نے لیبیا میں اپنے تربیتی کیمپ قائم کر رکھے ہیں جہاں تقریباً 200 مسلح جنگجو زیر تربیت ہیں۔'

یاد رہے کہ متعدد مغربی ممالک ماضی میں اس بارے میں خبردار کر چکے تھے کہ لیبیا کے اندر سیکیورٹی کی مخدوش صورتحال اور طوائف الملکوکی سے انتہا پسند فائدہ اٹھا سکتے ہیں۔ جنرل ڈیوڈ نے لیبیا میں داعش کے مشتبہ تربیتی مراکز کے خلاف کسی فوجی کارروائی کے امکان کو خارج از امکان قرار دیا ہے۔ امریکی جنرل کے بقول لیبیا میں داعش کی سرگرمیاں 'انتہائی محدود اور نئی ہیں۔'

ان کا مزید کہنا تھا کہ 'ان کیمپوں میں 'تقریباً 200' مسلح افراد زیر تربیت ہیں۔ "امریکی فوج ساری صورت حال کا باریک بینی سے جائزہ لے رہی ہے تاکہ اس بات کا تعین کیا جا سکے کیا مستقبل میں لیبیا میں داعش کی سرگرمیوں میں وسعت آ سکتی ہے۔"

عراق اور شام میں داعش کے خلاف امریکا اور اس کے اتحادیوں کے حملوں کا سلسلہ لیبیا میں تنظیم کے کیمپوں تک پھیلانے سے متعلق سوال کا جواب دیتے ہوئے امریکی جنرل نے کہا کہ "نہیں، ابھی نہیں۔"

ان کا مزید کہنا تھا کہ "دہشت گرد تنظیم نے مشرقی لیبیا میں اپنی سرگرمی کا نیا نیا آغاز کیا ہے، تاہم صورت حال پر نظر رکھنا ہماری ذمہ داری ہے تاکہ ہم تنظیم کے نیٹ ورک کی وسعت پر نظر رکھ سکیں۔"