.

زندہ انسان کو آگ میں جلا کر مارنا حرام ہے: مفتی اعظم

معاذ الکساسبہ کو آگ میں‌ جلانے والوں‌ کا کوئی مذہب نہیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کے مفتی اعظم اور ممتاز عالم دین الشیخ عبدالعزیز آل الشیخ نے دہشت گرد تنظیم دولت اسلامی 'داعش' کے ہاتھوں اردن کے یرغمال ہواباز معاذ الکساسبہ کو زندہ جلانے کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ زندہ انسان کو آگ میں جلانے والوں ‌کا کوئی دین ومذہب اور اخلاق نہیں۔

اخبار 'الشرق الاوسط' سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں‌نے کہا کہ کسی زندہ انسان کو آگ میں جلا کر موت سے ہم کنار کرنا اسلام میں‌ قطعی حرام ہے۔ الشیخ عبدالعزیز آل الشیخ نے کہا کہ زندہ انسانوں کو جلانے کا غیر انسانی طرز عمل 'داعش' کے ان خوارج کا وحشیانہ فعل ہے جو خود کو اسلام کا سب سے بڑا ٹھیکیدار سمجھتے ہیں۔ ان کے تمام دعوے باطل ہیں۔ وہ کفر کے راستے پر گامزن اور گمراہی کی نمائندگی کرتے ہیں اور اسلام کے کھلے دشمن ہیں۔

انہوں ‌نے کہا کہ کسی بھی ذی روح‌ کو آگ میں‌ جلانا صرف اللہ کے اختیار میں ‌ہے۔ اردنی پائلٹ معاذ الکساسبہ کو آگ میں ‌جلانے والوں کا کوئی دین، ایمان اور اخلاق نہیں ہے۔ یہ مجرمانہ حرکت ایک مفسد اور فتنہ پرور گروہ کی کارستانی ہے۔ دنیا اسے اسلام کی نمائندہ نہ سمجھے۔