شاہ سلمان، صدر اوباما کا کیمپ ڈیوڈ اجلاس پر تبادلہ خیال

امریکی صدر کی جانب سے سعودی عرب کے دفاع کے عزم کا اعادہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب کے فرمانروا شاہ سلمان بن عبدالعزیز نے امریکی صدر براک اوباما سے ٹیلی فون پر کیمپ ڈیوڈ میں ہونے والے سربراہ اجلاس کے حوالے سے تبادلہ خیال کیا ہے۔

شاہ سلمان نے ان سے گفتگو کرتے ہوئے کیمپ ڈیوڈ سربراہ اجلاس میں شرکت پر معذوری ظاہر کی ہے اور کہا کہ وہ ولی عہد شہزادہ محمد بن نایف بن عبدالعزیز اور نائب ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان کو سعودی عرب کی نمائندگی کے لیے بھیج رہے ہیں۔

دونوں لیڈروں نے فون پر گفتگو کے دوران امریکا اور سعودی عرب کے درمیان دوطرفہ تعلقات بڑھانے اور علاقائی اور عالمی امور سے متعلق مشاورت جاری رکھنے سے اتفاق کیا ہے۔وائٹ ہاؤس کی جانب سے جاری کردہ بیان کے مطابق دونوں لیڈروں نے علاقائی تنازعات کو طے کرنے کے لیے خلیج تعاون کونسل (جی سی سی) کے رکن ممالک سے مل کر کام کرنے سے اتفاق کیا ہے۔

یمن کے حوالے سے گفتگو کرتے ہوئے صدر اوباما نے سعودی عرب کی جانب سے یمن میں جنگ بندی کے اعلان کا خیرمقدم کیا اور دونوں لیڈروں نے جنگ زدہ ملک میں انسانی صورت حال کو ہنگامی بنیادوں پر حل کرنے کی ضرورت پر زوردیا ہے۔

امریکی صدر نے سعودی عرب کے خلاف کسی بھی بیرونی جارحیت کی صورت میں اس کے دفاع کے عزم کا اعادہ کیا ہے۔دونوں لیڈروں نے بات چیت کے دوران چھے بڑی طاقتوں اور ایران کے درمیان جوہری تنازعے پر ایک ایسے جامع سمجھوتے کی ضرورت پر زوردیا ہے جو ایران کے جوہری پروگرام کی پُرامن نوعیت کو یقینی بنائے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں