.

دمشق پر امریکی چڑھائی خطے کو ہلا دے گی : روس

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

روس نے خبردار کیا ہے کہ دمشق اور شامی حکومت کی فوج کے خلاف امریکا کی کسی بھی براہ راست جارحیت کا نتیجہ مشرق وسطی میں ہلا دینے والی تبدیلیوں کی صورت میں سامنے آئے گا۔

روسی اطلاعات کی ایجنسی نے وزارت خارجہ کی ترجمان ماريا زاخاروفا کے حوالے سے بتایا ہے کہ شامی حکومت اور فوج پر امریکا کی "براہ راست چڑھائی" مشرق وسطی میں "خوف ناک اور ہلا دینے والی تبدیلیوں" کا سبب بن جائے گی۔

روس اور امریکا شام کے تنازع میں ایک ایک فریق کو سپورٹ کر رہے ہیں۔

حال ہی میں امریکا اور روس کے توسط سے طے پانے والی فائربندی ٹوٹ چکی ہے اور ہفتے کے روز روسی جنگی طیاروں نے حلب شہر میں شامی اپوزیشن کے زیر کنٹرول علاقوں کو بم باری کا نشانہ بنایا۔

ادھر امریکی وزارت خارجہ کے ترجمان مارک ٹونر نے جمعے کے روز "سی این این" کو دیے گئے بیان میں کہا تھا کہ روسی معاونت سے حلب پر شامی حکومت کے حملوں کی روشنی میں شام کی جنگ کے خاتمے کے لیے سفارتی عمل کے فائدہ مند ہونے کا یقین رکھنا مشکل ہے۔

اس سے ایک روز قبل امریکی وزیر خارجہ جان کیری نے کہا تھا کہ واشنگٹن شام کے حوالے سے ماسکو کے ساتھ سفارتی بات چیت معطل کرنے کے قریب ہے۔ تاہم امریکا کی جانب سے ابھی تک بات چیت معطل کرنے کا اعلان نہیں کیا گیا۔