ہنگری : شامی پناہ گزینوں کو گرانے والی خاتون کیمرہ مین کو سزا !

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ہنگری میں عدالت نے خاتون کیمرہ مین پیٹرا لیزلو کو شامی تارکین وطن کے ساتھ غیر اخلاقی حرکت کے ارتکاب پر جیل کی سزا سنا دی ہے۔ پیٹرا نے آٹھ ستمبر 2015 کو ہنگری اور سربیا کی سرحد پر بھاگتے ہوئے تارکین وطن کو لات مار کر اُس وقت گرا دیا تھا جب ہنگری کی پولیس ان شامیوں کا تعاقب کر رہی تھی۔ ہنگری سے تعلق رکھنے والی پیٹرا کا نشانہ بننے والوں میں ایک کم عمر بچی اور ایک مرد شامل تھا جس نے اپنی گود میں ایک چھوٹے بچے کو اٹھایا ہوا تھا۔

ہنگری کے تیسرے بڑے شہر Szeged کی مقامی عدالت نے پیٹرا کو "بُرے برتاؤ" اور ایک شخص کو زخمی کرنے کے الزام میں تین برس کے آزمائشی دورانیے کی سزا سنائی ہے۔

مقدمے کے جج کے مطابق پیٹرا کے مرتکب جرم نے سماجی حلقوں میں غم وغصے کا طوفان کھڑا کر دیا تھا اور ایسی کوئی دلیل نہیں جس کو وہ اپنی صفائی میں پیش کر سکے۔

اس سے قبل ہنگری کے ایک نجی ٹی وی چینل "این ون ٹی وی" نے پیٹرا کی اُس ویڈیو کے منظر عام پر آنے کے بعد اسے ملازمت سے فارغ کر دیا تھا جس میں خاتون کیمرہ مین واضح طور پر شامی پناہ گزینوں کو لات ما کر گراتے ہوئے نظر آرہی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں